فوج کا نیا سربراہ ٹاپ پانچ جرنیلوں میں سے ہی بنایا جائے گا،خواجہ آصف

6  ستمبر‬‮  2022

اسلام آباد (این این آئی)وزیردفاع خواجہ آصف کا کہنا ہے کہ فوج کا نیا سربراہ ٹاپ 5 جرنیلوں میں سے بنایا جائے گا، ان شاءاللہ اس اصول سے روگردانی نہیں کریں گے، یہ تعیناتی وزیراعظم ادارے کی مشاورت سے کرتے ہیں۔نجی ٹی وی پروگرام میں گفتگو کرتے ہوئے خواجہ آصف نے کہا کہ عمران خان کا فیصل آباد جلسے میں بیان شہباز گل کے بیان کی دوسری قسط ہے۔

ان کا کہنا تھا کہ شہباز گل نے پاک فوج کے رینک اینڈ فائل میں تصادم پیدا کرنے کی کوشش کی تھی۔ اب دوسری قسط عمران خان نے خود لانچ کی اور فوج کے 5 یا 6 تھری اسٹار جرنیلوں میں تفریق پیدا کرنے کی کوشش کی ہے۔خواجہ آصف نے کہا کہ نواز شریف نے بھی ہمیشہ ٹاپ 5 جرنیلوں میں سے ایک کو آرمی چیف بنایا، صرف بھٹو دور میں ضیاء الحق کو گیارھویں بارہویں نمبر سے منتخب کیا گیا۔دوسری جانب تحریک انصاف کی مرکزی سینئر نائب صدر ڈاکٹر شیریں مزاری نے کہاہے کہ کرپٹ ن لیگ اور پیپلز پارٹی ہمیشہ پاک افواج پر سیاست کھیلتی رہی،میموگیٹ سے لے کر ڈان لیکس تک کرپٹ لیڈرشپ کی فوج مخالفت کی ایک تاریخ ہے۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہاکہ نہایت احترام سے ہماری قیادت کی ٹویٹس اور فواد چوہدری کی پریس کانفرنس کے ذریعے واضح طور پر عمران خان کے بیان کی وضاحت کی گئی۔

عمران خان نے بیان میں آرمی چیف کا حوالہ اس لئے دیا کیونکہ کرپٹ ن لیگ اور پیپلز پارٹی ہمیشہ پاک افواج پر سیاست کھیلتی رہی۔ انہوں نے کہاکہ میموگیٹ سے لے کر ڈان لیکس تک اس کرپٹ لیڈرشپ کی فوج مخالفت کی ایک تاریخ ہے،اس تناظر میں آئی ایس پی آر کا بیان غیرضروری تھا۔ سابق وزیر نے کہاکہ افسوس کی بات یہ ہے کہ بیان تشویش کا باعث ہے کیونکہ ایسا لگتا ہے کہ عمران خان کے بیان کی وضاحت کے باوجود اسے غلط سمجھا گیا۔

یہ ایسے وقت میں ہوا جب پی ڈی ایم جان بوجھ کر عمران خان کے بیان کو توڑ مروڑ کر انہیں نشانہ بنا رہی ہے۔شیریں مزاری نے کہاکہ فیصل آباد میں عمران خان نے کسی موقع پر بھی فوج اور فوجی قیادت پر تنقید نہیں کی۔ ڈاکٹر شیریں مزاری نے کہاہے کہ کرپٹ ن لیگ اور پیپلز پارٹی ہمیشہ پاک افواج پر سیاست کھیلتی رہی،میموگیٹ سے لے کر ڈان لیکس تک کرپٹ لیڈرشپ کی فوج مخالفت کی ایک تاریخ ہے۔

موضوعات:



کالم



مرحوم نذیر ناجی(آخری حصہ)


ہمارے سیاست دان کا سب سے بڑا المیہ ہے یہ اہلیت…

مرحوم نذیر ناجی

نذیر ناجی صاحب کے ساتھ میرا چار ملاقاتوں اور…

گوہر اعجاز اور محسن نقوی

میں یہاں گوہر اعجاز اور محسن نقوی کی کیس سٹڈیز…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے (آخری حصہ)

میاں نواز شریف کانگریس کی مثال لیں‘ یہ دنیا کی…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے

بودھ مت کے قدیم لٹریچر کے مطابق مہاتما بودھ نے…

جنرل باجوہ سے مولانا کی ملاقاتیں

میری پچھلے سال جنرل قمر جاوید باجوہ سے متعدد…

گنڈا پور جیسی توپ

ہم تھوڑی دیر کے لیے جنوری 2022ء میں واپس چلے جاتے…

اب ہار مان لیں

خواجہ سعد رفیق دو نسلوں سے سیاست دان ہیں‘ ان…

خودکش حملہ آور

وہ شہری یونیورسٹی تھی اور ایم اے ماس کمیونی کیشن…

برداشت

بات بہت معمولی تھی‘ میں نے انہیں پانچ بجے کا…

کیا ضرورت تھی

میں اتفاق کرتا ہوں عدت میں نکاح کا کیس واقعی نہیں…