خطبہ حج کا مختلف زبانوں میں براہ راست اور فوری ترجمہ پروگرام کامیابی کے ساتھ اپنی منزلیں طے کرنے لگا

  منگل‬‮ 4 اگست‬‮ 2020  |  16:58

مکہ مکرمہ (این این آئی)الحرمین الشریفین کے انتظامی امور کی ذمہ دار جنرل پریذیڈنسی کی طرف سے جاری ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ خطبہ حج کا مختلف زبانوں میں براہ راست اور فوری ترجمہ پروگرام کامیابی کے ساتھ اپنی منزلیں طے کر رہا ہے۔ تین سال پیشتر شروع کیے گئےاس پروگرام میں رواں سال 10 زبانوں میں میدان عرفات سے خطبہ حج براہ راست پیش کیا گیا۔بیان میں کہا گیا ہے کہ رواںسال کرونا وبا کی وجہ سے حج متاثر ہوا مگر اس کے باوجود میدان عرفات سے خطبہ حج کے ترجمہ پروگرام پر کوئی اثر نہیں پڑا۔


ترجمہ پروگرام کو پوری دنیا بالخصوص حجاج کرام کے سامنے پیش کرنے کیلیے 100 ماہرین کی خدمات حاصل کی گئیںاعداد و شمار سے پتا چلا ہے کہ سنہ 1441 ہجری میں حج کے خطبے کے ترجمے کے منصوبے کے زائرین کی تعداد 22 ملین سے تجاوز کر گئی ہے جبکہ سامعین کی تعداد ساڑھے 7 ملین تک پہنچ گئی ہے۔ یہ لوگ بیک وقت ترجمے کے ساتھ اپنی زبان میں خطبہ سے مستفید ہو رہے ہیں۔خطبہ حج کے مختلف زبانوں میں سامعین کی بات کی جائے تو اردو زبان بولنے والے پہلے نمبر پر ہیں۔ اس بار اردو زبان کے 20.2 فی صد نے خطبہ جمعہ کا ترجمہ سماعت کیا۔ اردن سامعین کی تعداد ڈیڑھ ملین، ، انگریزی کے انگریزی کے ایک ملین یعنی 13.5 فی صد ، بنگالی کے 9 لاکھ یعنی 11.9 فی صد، فرانسیسی سات لاکھ 35 ہزار، 9.8 فی صد،ملائی سات لاکھ 15 ہزار، چینی کے 9 لاکھ 15 ہزار،، فارسی کے سات لاکھ ، ترکی کے چھ لاکھ اور ہوسیری کے چھ لاکھ سامعین نے خطبہ حج کو اپنی زبان میں ترجمے کے ساتھ سنا۔سب سے زیادہ خطبہ حج سننے والوں میں سعودی عرب ، متحدہ عرب امارات ، پاکستان ، برطانیہ ، انڈونیشیا ، ملائیشیا ، ہندوستان ، بنگلہ دیش ، فرانس اور امریکا شامل ہیں۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

“Be Kind To Yourself”

سکواڈرن لیڈر محمد اقبال ائیرفورس کے ریٹائر افسر ہیں‘ جسمانی عمر 73 برس ہے لیکن جذباتی 30 سال سے اوپر نہیں گئی‘ بچے بڑے ہیں اور مطمئن زندگی گزار رہے ہیں‘ اہلیہ کا انتقال ہو چکا ہے‘ یہ انہیں بہت مس کرتے ہیں‘ تین چار سو لطیفے یاد ہیں‘ جہاں کھڑے ہوتے ہیں وہاں چند منٹوں میں قہقہے ....مزید پڑھئے‎

سکواڈرن لیڈر محمد اقبال ائیرفورس کے ریٹائر افسر ہیں‘ جسمانی عمر 73 برس ہے لیکن جذباتی 30 سال سے اوپر نہیں گئی‘ بچے بڑے ہیں اور مطمئن زندگی گزار رہے ہیں‘ اہلیہ کا انتقال ہو چکا ہے‘ یہ انہیں بہت مس کرتے ہیں‘ تین چار سو لطیفے یاد ہیں‘ جہاں کھڑے ہوتے ہیں وہاں چند منٹوں میں قہقہے ....مزید پڑھئے‎