’آئی ایم ایف کی تجویز پر کرنسی کی قدر کم کرنا پڑی‘ وزیر خزانہ نے اعتراف کر لیا

  بدھ‬‮ 23 جون‬‮ 2021  |  10:46

اسلام آباد (این این آئی/مانیٹرنگ ڈیسک ) وفاقی وزیرخزانہ شوکت ترین نے کہاہے کہ تیل صاف کرنے والے کارخانے پاکستان میں توانائی کی سلامتی کیلئے ستون کی حیثیت رکھتے ہیں، جدیدیت، ماحولیات دوستی پاکستان کی تمام آئل ریفائنریز کی مشترکہ خصوصیت ہونا چاہیے۔وہ منگل کویہاں اپنی زیرصدارت پاکستان آئل ریفائننگ پالیسی 2021 کے مسودہ کے جائزہ لینے کیلئےاجلاس سے خطاب کررہے تھے۔ اجلاس میں وفاقی وزیرپاور، معاون خصوصی محصولات، معاون خصوصی پاور،سیکرٹری خزانہ، سیکرٹری پیٹرولیم، ڈی جی آئل، اورریفائنریز کے نمایندوں نے شرکت کی۔ وزیرخزانہ شوکت ترین نے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ پائیداربڑھوتری کیلئے وزیراعظم عمران خان معیشت


کے تمام شعبوں میں پیش رفت میں گہری دلچسپی لے رہے ہیں، توانائی کاشعبہ معیشت کوآگے لیجانے میں کلیدی حیثیت رکھتاہے۔ انہوں نے کہاکہ تیل صاف کرنے والے کارخانے پاکستان میں توانائی کی سلامتی کیلئے ستون کی حیثیت رکھتے ہیں، حکومت کی خواہش ہے کہ ملکی ریفائنریاں اپنے آپ کوبین الاقوامی معیارکے مطابق اپ گریڈکرے۔انہوں نے کہاکہ جدیدیت، ماحولیات دوستی پاکستان کی تمام آئل ریفائنریز کی مشترکہ خصوصیت ہونا چاہئیے۔ اس مقصد کیلئے حکومت بھرپورتعاون فراہم کرے گی،تیل صاف کرنے والے کارخانوں کے نمائندوں نے کہاکہ تیل کی صنعت حکومت کی جانب سے معاونت اوررہنمائی پربہت خوش ہے، انہوں نے بتایا کہ پوری آئل ریفائنریز کی صنعت اپنے آپ کو بین الاقوامی معیار کے مطابق اپ گریڈ کرنے کیلئے تیارہے اوراس مقصد کیلئے پورا فریم ورک تیارہے، نئی آئل ریفائنریز پالیسی کی منظوری سے بین الاقوامی معیارکے حصول کا سفر شروع ہوجائیگا۔وزیرخزانہ نے نئی پالیسی کے نفاذ میں پیش آنیوالی رکاوٹوں کودورکرنے کیلئے مشترکہ کام کرنے کی ضرورت پرزوردیا۔قومی اخبار کے مطابق اس موقع پر شوکت ترین نے یہ اعتراف بھی کیا کہ ”پی ٹی آئی کی حکومت کو آئی ایم ایف کی تجویز پر ڈسکاؤنٹ ریٹ، محصولات میں اضافہ اور کرنسی کی قدر میں کمی کرنا پڑی۔تاہم یہ سابق حکومتوں کی خراب پالیسیاں تھیں جن کی وجہ سے انہیں آئی ایم ایف سے رجوع کرنا پڑا۔


زیرو پوائنٹ

صرف پانچ ہزار روپے کے لیے

لاہور میں 23 جون 2021ء کی صبح 11 بج کر8 منٹ پر جوہر ٹائون میں ایک خوف ناک کار بم دھماکا ہوا تھا‘ دھماکے میں تین افراد جاں بحق اور 22 زخمی ہوئے جب کہ 12 گاڑیاں اور7 عمارتیں تباہ ہو گئی تھیں‘ بم کا اصل ہدف لشکر طیبہ کے لیڈر حافظ سعید تھے‘ یہ دھماکے سے چند گلیوں کے ....مزید پڑھئے‎

لاہور میں 23 جون 2021ء کی صبح 11 بج کر8 منٹ پر جوہر ٹائون میں ایک خوف ناک کار بم دھماکا ہوا تھا‘ دھماکے میں تین افراد جاں بحق اور 22 زخمی ہوئے جب کہ 12 گاڑیاں اور7 عمارتیں تباہ ہو گئی تھیں‘ بم کا اصل ہدف لشکر طیبہ کے لیڈر حافظ سعید تھے‘ یہ دھماکے سے چند گلیوں کے ....مزید پڑھئے‎