عمرہ مناسک کی بحالی سے قبل  الحرمین انتظامیہ کی طرف سے سخت ’’ایس او پیز‘‘کا اعلان تمام زائرین کو زمزم کیسے فراہم کیا جائے گا ؟ سعودی عرب نے مسلمانوں کو خوشخبری سنادی

  جمعہ‬‮ 25 ستمبر‬‮ 2020  |  13:12

ریاض(این این آئی)سعودی عرب کی حکومت کی طرف سے مرحلہ وار عمرہ کی ادائی کی اجازت دینے کے بعد الحرمین الشریفین کی جنرل پریزیڈینسی نے بھی معتمرین کے مسجد حرام میں استقبال کے لیے’’'ایس او پیز‘‘کا اعلان کیا ہے۔غیر ملکی میڈیا کے مطابق الحرمین الشریفین کیانتظامیہ کی طرف سے جاری کردہ ایک بیان میں کہا گیا ہے کہ عمرہ مناسک کی بحالی کے بعد مسجد حرام میں آنے والے زائرین کو بہترین اور اعلی معیار کی سہولیات فراہم کی جائیں گی تاکہ انہیں کرونا جیسی وبائی امراض سے بچایا جا سکے۔بیان میں کہا گیا ہے کہ مسجد حرم میں داخل


ہونے والے معتمرین میں بخار کی نشاندہی اور کرونا کی علامات کا پتا چلانے کے لیے جدید ترین ایچ ڈی کیمروں کا استعمال کیا جائیگا۔ ان کیمروں کی مدد سے معتمرین کی صحت کے بارے میں جان کاری میں مدد ملے گی اور ان کی روشنی میں انتظامیہ کو مزید حفاظتی انتظامات کرنا ہوں گے۔دیگر ایس اوپیز میں مسجد حرام میں آنے والے عمرہ زائرین کے لیے میڈیکل ماسک اور سماجی فاصلہ ضروری قرار دیا گیا ہے۔ تمام زائرین کو زمزم پیک شدہ بوتلوں میں فراہم کیا جائے گا۔ عمرہ کے دوران مسجد حرام میں باقاعدگی کے ساتھ طہارت اور جراثیم کش اسپرے کا اہتمام کیا جائے گا۔مسجد حرام کی جنرل پریزیڈینسی کے چیئرمین ڈاکٹر عبدالرحمان السدیس نے ایک بیان میںکہا ہے کہ مسجد حرام میں عمرہ کے مناسک کی ادائی کے دوران ایس اوپیز میںمزید سختی کا مقصد اللہ کے مہمانوں کو ’’کوویڈ 19-‘‘سے محفوظ رکھنا ہے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

مولانا روم کے تین دروازے

ہم تیسرے دروازے سے اندر داخل ہوئے‘ درویش اس کو باب گستاخاں کہتے تھے‘ مولانا کے کمپاﺅنڈ سے نکلنے کے تین اور داخلے کا ایک دروازہ تھا‘ باب عام داخلے کا دروازہ تھا‘ کوئی بھی شخص اس دروازے سے مولانا تک پہنچ سکتا تھا‘شاہ شمس تبریز بھی اسی باب عام سے اندر آئے تھے‘ مولانا صحن میں تالاب ....مزید پڑھئے‎

ہم تیسرے دروازے سے اندر داخل ہوئے‘ درویش اس کو باب گستاخاں کہتے تھے‘ مولانا کے کمپاﺅنڈ سے نکلنے کے تین اور داخلے کا ایک دروازہ تھا‘ باب عام داخلے کا دروازہ تھا‘ کوئی بھی شخص اس دروازے سے مولانا تک پہنچ سکتا تھا‘شاہ شمس تبریز بھی اسی باب عام سے اندر آئے تھے‘ مولانا صحن میں تالاب ....مزید پڑھئے‎