تنخواہ داروں اور بجلی صارفین کے بوجھ میں انکم ٹیکس اور سیلز ٹیکس کی مد میں اربوں کااضافہ

  پیر‬‮ 22 فروری‬‮ 2021  |  22:53

پشاور (آن لائن)مالی سال 2019-20کے پہلی شمشاہی کے دوران تنخواہ داروں پر انکم ٹیکس کے بوجھ میں 30.55ارب روپے اور بجلی کے صارفین سے ایڈوانس انکم ٹیکس اور سیلز ٹیکس کی وصولی میں 30.9ارب روپے کا اضافہ ہوا ہے ایف بی آر کے مختلف سیکٹرز سے ٹیکس وصولی کے بارے میں شمشاہی رپورٹ کے مطابق جولائی تا دسمبر تنخواہوں سے انکم ٹیکس کٹوتی 30.55ارب روپے اضافہ کے ساتھ 25.9ارب روپےسے بڑھ کر56.48ارب روپے تک پہنچ گئی ہے بجلی کے بلوں میں ایڈوانس انکم ٹیکس وصولی 5.66ارب روپے اضافہ کے ساتھ 19.23ارب روپے سے بڑھ کر 24.89ارب روپے تک پہنچ گئی


ہے بجلی کے بلوں کے ساتھ سیلز ٹیکس وصولی بھی 28.6ارب روپے سے بڑھ کر 52.6ارب روپے تک پہنچ گئی ہے ۔ بینکوں سے نقد رقوم پر ا یڈوانس ود ہو لڈنگ ٹیکس 17.69ارب روپے سے کم ہوکر 8.51ارب روپے تک آ گیا ہے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

کلاسیکل مثال

مجھے چند دن قبل ایک دوست نے خوف ناک واقعہ سنایا‘ ان کی گلی میں ایک خاندان رہتا ہے‘ خاوند ملک سے باہر محنت مزدوری کرتا ہے‘ بیٹا شادی شدہ ہے لیکن بے روزگار ہے‘ ایک پوتا اور پوتی بھی ہے‘ خاتون بوڑھی اور بیمار تھی‘ وہ برسوں سے شوگر کی مریض تھی لیکن ادویات اور خوراک میں ....مزید پڑھئے‎

مجھے چند دن قبل ایک دوست نے خوف ناک واقعہ سنایا‘ ان کی گلی میں ایک خاندان رہتا ہے‘ خاوند ملک سے باہر محنت مزدوری کرتا ہے‘ بیٹا شادی شدہ ہے لیکن بے روزگار ہے‘ ایک پوتا اور پوتی بھی ہے‘ خاتون بوڑھی اور بیمار تھی‘ وہ برسوں سے شوگر کی مریض تھی لیکن ادویات اور خوراک میں ....مزید پڑھئے‎