رزق میں برکت کے2 ایسے وظیفے کہ رزق کے دروازے کُھل جائیں اور آپ کیا آپکے ہمسائے بھی امیر ہو جائیں۔۔۔!!!

28  اگست‬‮  2017

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)علامہ ثاقب رضا مصطفائی نے رزق کی کشادگی کے بارے میں بیان کرتے ہوئے بتایا کہ ایک دفعہ حضرت عثمان غنی حضرت عبداللہ ابن مسعود کے گھر آئے اس وقت حضرت ابن مسعود سخت بیمار تھے، حضرت عثمان غنی نے ان کا حال پوچھا اور جب واپس لوٹنے لگے تو حضرت عثمان نے اشرفیوں کی دو تھیلیاں حضرت عبداللہ ابن مسعود کو دیں تو

حضرت عبداللہ ابن مسعود نے کہا کہ یہ کیا ہے تو حضرت عثمان غنی نے فرمایا کہ ان سے اپنی ضروریات پوری کر لینا، تو حضرت عبداللہ نے کہا کہ میں تو جا رہا ہوں میری تو ضروریات ختم ہو رہی ہیں، حضرت عثمانی غنی نے کہا کہ آپ کی بیٹیاں ہی بیٹیاں ہیں بیٹا تو ہے نہیں تو یہ آپ کے بعد آپ کی بیٹیوں کے کام آجائیں گی،تو حضرت عبداللہ ابن مسعود کا یقین دیکھئے کہا کہ یہ کسی اور کو دے دیں،میری بیٹیوں کو اس کی ضرورت نہیں رہے گی اس لئے کہ میری بیٹیاں اس وقت تک سوتی نہیں ہیں جب تک سورۃ واقعہ نہیں پڑھ لیتیں اور میرے رسول نے وعدہ کیا ہے اور یہ بات میں نے اپنے کانوں سے سنی ہے کہ سورۃ واقعہ فقر کو دور کرتی ہے،میری بیٹیاں سورۃ واقعہ کی عامل ہیں،اس لئے یہ پریشانی کم ازکم مجھے تو نہیں ہونی چاہئے کہ میرے بعد میری بیٹیوں کو رزق کہاں سے ملے گا ان کے پاس سورۃ واقعہ موجود ہے لہٰذا یہ اٹھاو اور کسی اور کو دے دو جس کے پاس سورۃ واقعہ نہیں ہے۔‎

موضوعات:



کالم



سرمایہ منتوں سے نہیں آتا


آج سے دس سال قبل میاں شہباز شریف پنجاب کے وزیراعلیٰ…

اللہ کے حوالے

سبحان کمالیہ کا رہائشی ہے اور یہ اے ایس ایف میں…

موت کی دہلیز پر

باباجی کے پاس ہر سوال کا جواب ہوتا تھا‘ ساہو…

ایران اور ایرانی معاشرہ(آخری حصہ)

ایرانی ٹیکنالوجی میں آگے ہیں‘ انہوں نے 2011ء میں…

ایران اور ایرانی معاشرہ

ایران میں پاکستان کا تاثر اچھا نہیں ‘ ہم اگر…

سعدی کے شیراز میں

حافظ شیرازی اس زمانے کے چاہت فتح علی خان تھے‘…

اصفہان میں ایک دن

اصفہان کاشان سے دو گھنٹے کی ڈرائیور پر واقع ہے‘…

کاشان کے گلابوں میں

کاشان قم سے ڈیڑھ گھنٹے کی ڈرائیو پر ہے‘ یہ سارا…

شاہ ایران کے محلات

ہم نے امام خمینی کے تین مرلے کے گھر کے بعد شاہ…

امام خمینی کے گھر میں

تہران کے مال آف ایران نے مجھے واقعی متاثر کیا…

تہران میں تین دن

تہران مشہد سے 900کلو میٹر کے فاصلے پر ہے لہٰذا…