وفاقی کابینہ کا ائیر فورس ٗنیوی اور سینٹورس مال کو سرکاری زمین پر قبضہ ختم کرنے کا حکم

  بدھ‬‮ 4 اگست‬‮ 2021  |  14:05

اسلام آباد (این این آئی)وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چودھری نے سندھ حکومت پر شدید تنقید کرتے ہوئے کہا کہ کراچی اور حیدرآباد ویکسینیشن کے معالے پر بھی سب سے پیچھے ہیں،سندھ حکومت اپنے معاملات پر نظر ڈالے، گورننس بہتر کرنے کی کوشش کرے، سعودی عرب سے 23 قیدی واپس پاکستان پہنچ گئے ہیں ،انتخابی اصلاحات کیلئے اپوزیشن کیساتھ بات چیت جاری ہے،بڑے معاملات پر حکومت اور اپوزیشن کو ایک پوزیشن لینی پڑیگی،ہم نے اپنے اصلاحات کے 49 نکات پیش کر دیئے، اگر اپوزیشن کو اختلاف ہے تو اپنی اصلاحات لے کر آئے،شہباز شریف کی ساتھ چلنے کی بات


خوش آئند ہے ،نواز شریف اور الطاف حسین کو پارٹی قیادت کرنے کا حق نہیں ،مریم نواز سمیت اسمبلی سے باہر لوگ نظام تباہ کرنا چاہئے ہیں ، منتخب اراکین سے ہی بات چیت ہوگی ،اسلام آباد پولیس کو اپنی پوسٹیں ختم کرنے کا کہا ہے،اسلام آباد کے گرین ایریاز میں جن اداروں کی جانب سے بھی تجاوزات کی گئی ہیں ان کو پیچھے ہٹادیا گیا ہے،کسی دباؤ کے بغیر تجاوزات کے خلاف کارروائی پر عمل درآمد جاری رہیگا،کپاس کی فی من امدادی قیمت 5 ہزار روپے من مقرر کی گئی ہے، وفاقی وزراء ،وزراء مملکت کی تنخواہیں بڑھانے کو مسترد کردیا ہے ، تنخواہیں صرف سول سرونٹس کی بڑھائی جائیگی،وزیراعظم ہاؤس کو کمرشل سرگرمیوں کیلئے کھولنے کا فیصلہ موخر کردیا ہے، وہاں32 ارب کی لاگت سے یونیورسٹی کی تعمیر جاری ہے جبکہ وفاقی کابینہ نے کامیاب جوان پروگرام ،ڈپٹی ایڈمنسٹریٹر کراچی کی تعیناتی ،امریکہ کو فراڈ کے مقدمے میں مطلوب مجاہد پرویز کوامریکہ کے حوالے کرنے کی منظوری دیتے ہوئے 61اشیاء کی درآمد پر ڈیوٹی کو معاف کردیا ہے۔وفاقی کابینہ کے اجلاس کے بعد میڈیا کو بریفنگ دیتے ہوئے وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات فواد چودھری نے کہاکہ اسلام آباد میں 50 فیصد اور لاہور میں 27 فیصد شہریوں کی کورونا ویکسینیشن ہوگئی لیکن کراچی اور حیدرآباد ویکسینیشن میں بھی سب سے پیچھے ہیں اور اسی لئے سب سےزیادہ مسئلہ وہیں پر ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم حکومت سندھ پر تنقید نہیں کرنا چاہتے ہیں لیکن سندھ حکومت کو چاہیے کہ وہ اپنے معاملات پر نظر ڈالے، اپنے گریبان میں جھانکیں اور اپنی گورننس کچھ بہتر کرنے کی کوشش کرے، پاکستان میں جس شعبے کے اعداد وشمار آتے ہیں اس میں ہر شعبے میں حکومت سندھ سب سے پیچھے ملتی ہے جوبڑی بدقسمتی کی بات ہے۔ انہوں نے کہا کہ اگر معاملہ ایسے رہا تو اس پر بڑی تشویش پائی جاتی ہے کیونکہ سندھ ہمارا بہت ہی اہم صوبہ ہے، بہت بڑی آبادی کا مسکن ہے، یہ نہیں ہوسکتا کہ ہم بیٹھ کر شکلیں دیکھیں گے۔ انہوں نے کہا کہ ہم حکومت سندھ کو بار بار کہہ رہے ہیں کہ وفاقی حکومت کے اختیارات ہیں کہ صوبوں کو ان کی گورننس کی طرف توجہ دلائیں اور ہم حکومت سندھ کو ان کی گورننس کی طرف توجہ دلاتے رہتے ہیں،جس کا مقصد یہی ہوتا ہے کہ وہ سندھ کے عوام کی بہتری کے لیے اقدامات کریں۔ انہوں نے کہا کہ کابینہ اجلاس کے آغاز میں ہی وزیراعظم کو بتایا گیا کہ سعودی عرب سے 23 قیدی واپس پاکستان پہنچ گئے ہیں اور اب تک پوری دنیا سے سینکڑوں قیدی پاکستان پہنچ گئے ہیں جو بیرون ملک معمولی جرائم پر جیلوں میں تھے۔انہوں نے کہا کہ یہ عمران خان ہی ہیں جو بیرون ملک مقیم پاکستانیوںکا درد رکھتے ہیں ورنہ ہمارے سفارت خانے ان کو اندر گھسنے نہیں دیتے تھے ، سعودی عرب میں لیبر کا خیال نہ رکھنے پر پورا سفارتخانہ تبدیل کردیا گیا، وزیراعظم نے وزارت خارجہ کو خصوصی احکامات دیئے کہ اوورسیز پاکستانیوں کے مسائل حل کریں۔ انہوں نے کہا کہ بابراعوان، امین الحق اور شبلی فراز نے الیکٹرونک ووٹنگ مشین پر وزیراعظم کو تازہترین پیشرفت سے آگاہ کیا، اپوزیشن کیساتھ انتخابی اصلاحات کیلئے بات چیت کر رہے ہیں اور سینیٹ کی کمیٹی ایک ابتدائی نشست کر بھی چکی ہے۔ انہوں نے کہا کہ سپیکر آفس اپوزیشن کے ساتھ کمیٹی اور بیک ڈور پر بھی معاملات آگے بڑھا رہے ہیں۔ آزاد جموں و کشمیر کے انتخابات پر بات کرتے ہوئے وزیر اطلاعات نے کہا کہ کشمیر کے وزیراعظم نے انتخابات کروا رہے تھے، ان کے ہم زلف الیکشنکمیشن کے سینئر رکن تھے اور الیکشن کمیشن وزیراعظم نے لگایا تھا، سارا پیسہ، پولیس اور بیوروکریسی وہاں کی حکومت کے پاس تھی لیکن اس کے بعد بھی جب مسلم لیگ (ن) بری طرح ہار گئی تو اٹھ کر کہا کہ دھاندلی ہوئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف (پی ٹی آئی) یہاں 10 الیکشن ہار چکی ہے، سیالکوٹ میں ایک الیکشن جیتے تو مسلم لیگ (ن) نے کہا کہ دھاندلی ہوئی تواس کا حل کیا ہے، لہٰذا ضروری ہے بڑے معاملات پر حکومت اور اپوزیشن کو ایک پوزیشن لینی پڑے گی۔انہوں نے کہا کہ ہم نے اپنے اصلاحات کے 49 نکات پیش کر دیے ہیں، اگر اپوزیشن کو اختلاف ہے تو اپنی اصلاحات لے کر آئیں، ہم واضح کرچکے ہیں کہ ہمارے نکات حتمی نہیں ہیں، یہ ہماری سوچ ہے اور اگر آپ کو اختلاف ہے تو اپوزیشن بہتر حل ہے تو بیٹھ کر بات کریں۔ انہوں نے کہا کہ شہبازشریف نے ساتھ چلنے کی بات کی ہے جو بڑی خوش آئند ہے ،پاکستان مسلم لیگ (ن) اور پاکستان پیپلزپارٹی (پی پی پی) کے اسمبلی کے اندر موجود رہنماؤں کو قیادت کرنی چاہیے، نواز شریف اور الطاف حسین کو پارٹی کی قیادت کرنے کا حق نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ نواز شریف اور مریم نواز سمیت جو لوگ اسمبلی سے باہر ہیں وہ نظام تباہ کرنا چاہتے ہیں، جو منتخب اراکین ہیں صرف انہی سے بات ہوگی۔انہوں نے کہا کہ چیئرمین کیپٹل ڈویلپمنٹ اتھارٹی (سی ڈی اے) کی جانب سے اسلام آباد کے سیکٹر ای ایٹ اور سیکٹر ای نائن میں تجاوزات ہٹانے کے حوالے سے کابینہ کو بریفنگ دی گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ کابینہ نے اس عزم کا اعادہ کیا ہے کہ نیشنل پارک میں کسی قسم کی تجاوزات کی اجازت ہرگز نہیں دی جائیگی اور وزیراعظم نے اس حوالے سے سخت احکامات جاری کئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ اسلام آباد کے گرین ایریاز میں جن اداروں کی جانب سے بھی تجاوزات کی گئی ہیں، ان کو پیچھے ہٹادیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ نیول فورسز سے کہا گیا کہ اپنی باؤنڈری گرین ایریا سے پیچھے لے کر جائیں، فضائیہ کو کہا گیا ہے کہ وہ اپنا ایریا چھوڑ کر پیچھے چلے جائیں گے۔وزیر اطلاعات نے کہا کہ سرکاری اداروں خصوصاً اسلام آباد پولیس نے بہت سارے علاقوں میں اپنی چیکپوسٹیں بنائی ہیں، ان کو کہا گیا کہ وہ اپنی چیک پوسٹیں ختم کریں اور جو علاقہ چاہے کسی ادارے یا طاقت ور آدمی کا ہے، ان کی تجاوزات کو ختم کردیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ سینٹورس میں سردار تنویرالیاس کیخلاف بھی کارروائی کی گئی ہے جو ہمارے رہنماء ہیں اور ابھی آزاد کشمیر میں منتخب ہوگئے ہیں، وزیراعظم نے طاقت ور ترین لوگوں کے خلاف کارروائی کا حکم دیا ہے۔انہوں نے کہا کہ کسی دباؤ کے بغیر تجاوزات کے خلاف کارروائی پر عمل درآمد جاری رہے گا، ہم قبضے نہیں ہونے دیں گے، ہم اسلام آباد کے اندر گرین ایریاز کو بحال کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کپاس کی فی من امدادی قیمت 5 ہزار روپے من مقرر کی گئی ہے، کابینہ نے وفاقی وزراء اور وزراء مملکت کی تنخواہیں بڑھانے کو مسترد کردیا ہے ، تنخواہیں صرف سول سرونٹس کی بڑھائی جائیگی۔انہوں نے بتایا کہ وزیراعظم ہاؤس کو کمرشل سرگرمیوں کیلئے کھولنے کا فیصلہ موخر کردیا گیا ہے، وزیراعظم ہاؤس میں 32 ارب کی لاگت سے یونیورسٹی کی تعمیر جاری ہے۔ انہوں نے کہا کہ کابینہ نے ڈپٹی ایڈمنسٹریٹر کراچی کی تعیناتی کی منظوری دیدی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ممنوعہ اسلحے کے لائسنس کے اجراء کا اختیار وزیر داخلہ یا سیکریٹری داخلہ اور غیرممنوعہ اسلحے کے لائسنس کے اجرا کا اختیار وزیر، سیکریٹری، وزیر داخلہ،ایڈیشنل سیکریٹری ایڈمن کو دینے کی تجویز دی ہے، یہ اختیار پہلے وزیراعظم کے پاس تھا۔ انہوں نے کہا کہ کابینہ نے امریکی حکومت کی درخواست پر فراڈ کے مقدمے میں مطلوب مجاہد پرویز کو امریکا کے حوالے کرنے کی منظوری دیدی ہے۔ انہوں نے کہا کہ مجاہد پرویز پر کرپشن اور قانون شکنی میں ملوث ہونے کے الزامات ہیں، ایڈیشنل ڈپٹی کمشنر کی جانب سے تحقیقات کے نتیجے میں یہ باتثابت ہوئی تھی کہ مذکورہ شخص پر قانون شکنی کے الزامات بظاہر حقائق پر مبنی ہیں اور اس حوالے سے ہم نے خود جو تحقیق کی تھی اس کے نتیجے میں امریکا کے حوالے کیا گیا ہے۔وزیراطلاعات نے کہا کہ آئین کے آرٹیکل 51 تھری کے تحت قومی اسمبلی میں مختلف صوبوں کی نشستوں کی تقسیم کے معاملے پر غور کرتے ہوئے فیصلہ کیا گیا کہ مردم شماری کے عبوری اور حتمی اعداد و شمار کوئیخاص فرق سامنے نہیں آیا لہٰذا ان نشستوں میں ردو وبدل کی ضرورت نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ کابینہ کو معاشی اشاریوں پر تفصیلی بریفنگ دی گئی اور یہ بات بڑی خوش کن ہے کہ مہنگائی کے اعداد وشمار میں مسلسل کمی آرہی ہے اور نئے اعداد وشمار کے مطابق مہنگائی اس وقت 7.4 فیصد پر آئی ہے۔ انہوں نے کہا کہ کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ پچھلے پورے ایک سال میں 1.9 ارب ڈالر رہا ہے، جو20 ارب ڈالر سے یہاں آیا ہے، ابھی کرنٹ اکاؤنٹ خسارہ بڑھ رہا ہے کیونکہ ہمارے ہاں نجی سرمایہ کاری بہت بڑھی ہوئی ہے۔وزیراطلاعات نے بتایا کہ بینکوں کے ہمارے مجموعی قرضوں میں نجی قرضوں میں 75 ارب روپے پچھلے سال اور اس سال بڑھ کر 489 ارب روپے پر پہنچ گیا ہے اور اس سے اندازہ لگائیں کہ کاروبارمیں کتنی وسعت آئی ہے۔انہوں نے کہا کہ 61 اشیا کی درآمد پر ڈیوٹی معاف کردی گئی ہے جوکووڈ سے متعلق صحت کی اشیا ہیں۔ انہوں نے کہا کہ کابینہ کے فیصلوں میں سب سے اہم کامیاب جوان پروگرام کی منظوری ہے اور کوشش کریں گے کہ اس ہفتے اس کا افتتاح ہو۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

الیکشن کمیشن میں کیا ہو رہا ہے؟

میں اگر چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کی ایک فقرے میں تشریح کروں تو یہ کہہ دینا کافی ہو گا ’’حکومت غلط آدمی سے ٹکرا گئی ہے‘ اس لڑائی میں صرف ایک فریق کو نقصان ہو گا اور وہ ہو گی حکومت ‘‘۔سکندر سلطان راجہ بھیرہ کے قریب چھوٹے سے گائوں چھانٹ میں پیدا ہوئے‘ گائوں میں بجلی تھی‘ ....مزید پڑھئے‎

میں اگر چیف الیکشن کمشنر سکندر سلطان راجہ کی ایک فقرے میں تشریح کروں تو یہ کہہ دینا کافی ہو گا ’’حکومت غلط آدمی سے ٹکرا گئی ہے‘ اس لڑائی میں صرف ایک فریق کو نقصان ہو گا اور وہ ہو گی حکومت ‘‘۔سکندر سلطان راجہ بھیرہ کے قریب چھوٹے سے گائوں چھانٹ میں پیدا ہوئے‘ گائوں میں بجلی تھی‘ ....مزید پڑھئے‎