صوبائی دارالحکومت میں صفائی کا نظام درہم برہم ہو گیاصفائی کرنے والی کمپنی البراک کی مشینری جواب دے گئی

  جمعہ‬‮ 18 ستمبر‬‮ 2020  |  18:29

لاہور( این این آئی )صوبائی دارالحکومت لاہور میںصفائی کا نظام درہم برہم ہو گیا، صفائی کرنے والی کمپنی البراک کی مشینری جواب دے گئی، شہر کی سڑکوں پر دس ہزار ٹن کوڑا پڑا ہے۔ ایل ڈبلیو ایم سی نے دعوی کیا ہے کہ کوڑا کرکٹ بروقت نہ اٹھانے پر البیراک کو نوٹس جاری کر دیئے۔نجی ٹی وی کے مطابق شمالی لاہور چائنہ سکیم، شاد باغ، بادامی باغ، حبیب اللہ روڈ، گڑھی شاہو ،میو ہسپتال روڈ، انار کلی، شاد مان اور اندرون شہر سمیت کئی مقامات پر گندگی کی نذر ہوچکے ہیں۔ ذرائع کے مطابق صفائی کمپنی البیراک آدھے شہر کی


صفائی کی ذمہ دار ہے جس کے ساڑھے 4 ہزار کنٹینروں میں سے 1800 کنٹینرز فعال اور 2600 غائب ہیں۔ذرائع نے انکشاف کیا کہ ایل ڈبلیو ایم سی کمپنی بورڈ نے 7 برسوں میں صفائی کنٹریکٹر کو 35 ارب روپے ادا کئے۔ صفائی کا عمل سست روی کا شکار ہونے پر گندگی کے ڈھیر لگ گئے ہیں۔ صفائی کیلئے مشینری اور انفرادی قوت کے ساتھ مزید 4 روز درکارہوں گے۔دوسری جانب ایل ڈبلیو ایم سی کا عملہ بھی موثر مانیٹرنگ نہ ہونے کی وجہ سے من مرضی سے ڈیوٹی کرتا ہے ۔ مرکزی شاہراہوںاور ان سے ملحقہ گلی محلے صاف کئے جاتے ہیں جبکہ باقی علاقوں میں صفائی نہ ہونے اور کوڑا کرکٹ نہ اٹھائے جانے کی وجہ سے یہی کوڑا کرکٹ کی بندش کا باعث بن رہا ہے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

صرف تین ہزار روپے میں

دنیا میں جہاں بھی اردو پڑھی جاتی ہے وہاں لوگ مختار مسعود کو جانتے ہیں‘ مختار مسعود بیورو کریٹ تھے‘ ملک کے اعلیٰ ترین عہدوں پر رہے‘ لاہور کا مینار پاکستان ان کی نگرانی میں بنا‘ یہ اس وقت لاہور کے ڈپٹی کمشنر تھے‘ چارکتابیںلکھیںاور کمال کر دیا‘ یہ کتابیں صرف کتابیں نہیں ہیں‘ یہ تاریخ‘ جغرافیہ اور پاکستان کے ....مزید پڑھئے‎

دنیا میں جہاں بھی اردو پڑھی جاتی ہے وہاں لوگ مختار مسعود کو جانتے ہیں‘ مختار مسعود بیورو کریٹ تھے‘ ملک کے اعلیٰ ترین عہدوں پر رہے‘ لاہور کا مینار پاکستان ان کی نگرانی میں بنا‘ یہ اس وقت لاہور کے ڈپٹی کمشنر تھے‘ چارکتابیںلکھیںاور کمال کر دیا‘ یہ کتابیں صرف کتابیں نہیں ہیں‘ یہ تاریخ‘ جغرافیہ اور پاکستان کے ....مزید پڑھئے‎