امتحان میں نمبر کم آنے پر کم سن طالبعلم نے اپنی جان لے لی،سوشل میڈیا پر طالبعلم کا والدین کے نام لکھا گیا نوٹ وائرل ہو گیا

  پیر‬‮ 14 اکتوبر‬‮ 2019  |  19:46

لاہور(آن لائن)امتحانات میں نمبرز کم آنے پر ایک کم سن طالبعلم نے اپنی جان لے لی۔ تفصیلات کے مطابق سوشل میڈیا کے ذریعے موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق کم سن طالبعلم نے امتحان میں نمبر کم آنے پر نہر میں کود کر اپنی جان لے لی۔ خود کشی سے قبل والدین کے نام لکھے گئے نوٹ میں طالبعلم کا کہنا تھا کہ ''میرے پیارے ابو اور امی، مجھے معاف کر دینا، میرا رزلٹ بہت گندا آیا ہے، اس کی وجہ سے میری اب کوئی عزت نہیں رہے گی۔مگر میں نے نمبر لینے کی کوشش کی تھی۔ بس مجھے معاف کر


دینا۔''اسی نوٹ کے پیچھے یہ بھی تحریر تھا کہ ''اس نوٹ کو پڑھنے والے میرے گھر بتا دو کہ میں یہاں ہوں '' اور ساتھ ہی اپنے والدین کا فون نمبر بھی لکھا۔سوشل میڈیا پر اس منظر کی کچھ تصاویر اور طالبعلم کے ہاتھوں والدین کے لیے لکھا گیا خط بھی وائرل ہو گیا ہے۔سوشل میڈیا پر وائرل ہونے والی تصاویر میں طالبعلم کے جوتے اور اسکول کا بستہ بھی موجود ہے جسے دیکھ کر ہر کوئی اشکبار ہو گیا۔ سوشل میڈیا پر وائرل تصاویر میں ریسکیو اہلکاروں کو نہر سے بچے کی لاش نکالتے ہوئے بھی دیکھا گیا۔خود کشی کرنے والے بچے سے متعلق مزید معلومات حاصل نہیں ہو سکیں نہ ہی بچے کے اہل خانہ کا کوئی بیان سامنے آیا۔سوشل میڈیا صارفین نے امتحانات میں نمبر لینے کے لیے بچوں پر دبا ڈالنے والے والدین کو سخت تنقید کا نشانہ بنایا۔ امتحانات میں نمبرز کم آنے پر ایک کم سن طالبعلم نے اپنی جان لے لی۔ تفصیلات کے مطابق سوشل میڈیا کے ذریعے موصول ہونے والی اطلاعات کے مطابق کم سن طالبعلم نے امتحان میں نمبر کم آنے پر نہر میں کود کر اپنی جان لے لی۔ خود کشی سے قبل والدین کے نام لکھے گئے نوٹ میں طالبعلم کا کہنا تھا کہ ''میرے پیارے ابو اور امی، مجھے معاف کر دینا، میرا رزلٹ بہت گندا آیا ہے، اس کی وجہ سے میری اب کوئی عزت نہیں رہے گی۔مگر میں نے نمبر لینے کی کوشش کی تھی۔ بس مجھے معاف کر دینا۔''

موضوعات:

loading...