حکومت عوام کو بے سری لوریاں سناکر اپنا وقت پورا کررہی ہے، بڑھتی مہنگائی نے عوام کے اعصاب جھنجھوڑ کے رکھ دیئے، تہلکہ خیز دعویٰ

  پیر‬‮ 1 مارچ‬‮ 2021  |  23:24

لاہور (آن لائن) امیر جماعت اسلامی سینیٹر سراج الحق نے کہا کہ حکومت عوام کو بے سری لوریاں سناکر اپنا وقت پورا کررہی ہے۔ ملک میں بڑھتی ہوئی مہنگائی نے عوام کے اعصاب جھنجھوڑ کے رکھ دیئے ہیں۔ بحران کے شکار عوام کی کوئی داد رسی کرنے کے لیے تیار نہیں۔ وافر مقدار میں چینی ہونے کے باوجود ملک بھر میں چینی100 روپے کلو سے زیادہ میں فروخت ہورہی ہے۔ یہ چینی مافیا کو نوازنا نہیں تو اور کیاہے؟ حکومت نے فروری میں سب سے کم یوٹرن اور جھوٹ بولے ہیں کیونکہ مہینے کے دن کم تھے۔حکومت کے ہزار دنوں


میں صرف دعوے ، وعدے اور اعلانات ہیں ، عمل کا خانہ خالی ہے ۔ دنیا کے مختلف ممالک میں پیدا کی جانے والی اسلاموفوبیا کی لہر کی ہم بھر پور مذمت کرتے ہیں ۔ اسلام مکمل ضابطہ حیات ہے ۔ اللہ کے نظام کو ہی غالب آناہے ۔ جماعت اسلامی واحد آپشن ہے ۔ ہم فرد کی نہیں اللہ اور رسول ؐ کے نظام کی حکمرانی چاہتے ہیں ۔ حکومت کے قول و فعل میں تضاد ہے تبدیلی کے وعدے ہوا میں تحلیل ہوتے نظرآرہے ہیں ۔موجودہ دور میں مہنگائی نے عام آدمی کی کمرتوڑ کے رکھ دی ہے۔ بڑھتی ہوئی مہنگائی پر جماعت اسلامی 12مارچ کو فیصل آباد اور21مارچ کو ملتان میں جلسہ عام کرے گی۔ ان خیالات کااظہار انہوںنے منصورہ میں کارکنان کی تربیتی ورکشاپ سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ سینیٹر سراج الحق کہاکہ ملک میں دو کروڑ سے زیادہ بچے سکول سے باہر ہیں لیکن حکومت اسے سنجیدگی سے نہیں لے رہی۔ حکومت نے دن بہ دن عوام کی پریشانیوں کے انبار لگا دیئے ہیں۔ سکول کے ساتھ ساتھ بہت سارے طالب علم کالجز، یونیورسٹی جیسی تعلیم سے محروم ہیں۔ آئے روز تعلیم کا مہنگا ہونا اور حکومت کاتوجہ نہ کرنا قابل افسوس ہے ۔پاکستان کے دیگر شعبوں کا بجٹ تو اربوں روپے تک ہے لیکن تعلیم کا بجٹ نہ ہونے کے برابر ہے۔امیر جماعت نے کہاکہ ملک میں بیروزگاری کم ہونے کا نام نہیں لے رہی ، پاکستان میں بے روزگار افراد کی تعداد لاکھوں تک پہنچ گئی ہے جس میں آئے روز اضافہ ہورہاہے۔ نوجوانوں کی بڑی تعدادموجودہ حکومتکی پالیسیوں اور جھوٹے وعدوں سے مایوسیوں کا شکار نظرآتی ہے۔ حکومت لوگوں کو روزگار دینے کی بجائے روزگار چھین رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ پی ٹی آئی حکومت کو دو سال سے زیادہ ہونے کے باوجود ملکی معیشت کی حالیہ ابتری اور نئے قرضوں اور غیر ملکی امداد کے بعد صورتحال مزید خراب ہوتی جارہی ہے جو تشویشناک ہے۔امیر جماعت نے کہا کہ حکمرانوں کو ملکی معیشت پراپنا قبلہ درست کرنا ہوگا نہیں تو پیدا شدہ معاشی بحران اوربھی شدت اختیار کرے گا۔ انہوں نے کہاکہ حکومت فوری طور پر سودی نظام کے خاتمے کا اعلان کرے ۔ اللہ کے قانون سے ٹکراناہی ہمارے زوال کا باعث ہے ۔اگر ملک میں قوانین قرآن وسنت کے متصادم ہوں گے تو کبھی خوشحالی نہیں آسکتی۔جماعت اسلامی لوگوں کو بندوں کی غلامی سے نکال کر اللہ کی غلامی میں دینا چاہتی ہے ۔ قوم کے پاس اب جماعت اسلامی واحد آپشن ہے ہم ملک کو حقیقی معنوں اسلامی خوشحال بناسکتے ہیں ۔ قوم نے جماعت اسلامی کو موقعہ دیا تو کبھی مایوس نہیں کریں گے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

راﺅنڈ اباﺅٹ

اندر کمار گجرال بھارت کے 12 ویں وزیراعظم تھے‘ یہ 1997ءاور 1998ءکے درمیان ایک سال وزیراعظم رہے‘ اٹل بہاری واجپائی ان کے بعد وزیراعظم بنے تھے‘ گجرال جہلم میں پیدا ہوئے تھے‘ ان کی ساری تعلیم جہلم اور لاہور کی تھی اور یہ دل سے پاکستان اور بھارت کے تعلقات بہتر دیکھنا چاہتے تھے‘ میاں نواز شریف کے ....مزید پڑھئے‎

اندر کمار گجرال بھارت کے 12 ویں وزیراعظم تھے‘ یہ 1997ءاور 1998ءکے درمیان ایک سال وزیراعظم رہے‘ اٹل بہاری واجپائی ان کے بعد وزیراعظم بنے تھے‘ گجرال جہلم میں پیدا ہوئے تھے‘ ان کی ساری تعلیم جہلم اور لاہور کی تھی اور یہ دل سے پاکستان اور بھارت کے تعلقات بہتر دیکھنا چاہتے تھے‘ میاں نواز شریف کے ....مزید پڑھئے‎