ملک میں موبائل فون کی تیاری اور اسمبلنگ پر مراعات ملیں گی ، اقتصادی رابطہ کمیٹی نے موبائل ڈیوائس مینوفیکچرنگ پالیسی کی منظوری دیدی

  جمعہ‬‮ 22 مئی‬‮‬‮ 2020  |  0:03

اسلام آباد (این این آئی)اقتصادی رابطہ کمیٹی نے موبائل ڈیوائس مینوفیکچرنگ پالیسی منظوری دیدی، ملک میں موبائل فون کی تیاری اور اسمبلنگ پر مراعات ملیں گی جبکہ ای سی سی نے کپاس کی مداخلتی قیمت مقرر کرنے کی سمری مسترد کردی۔اقتصادی رابطہ کمیٹی کا اجلاس مشیر خزانہ ڈاکٹر حفیظ شیخ کی زیر صدارت اسلام آباد میں ہوا ۔اجلاس میں موبائل فون مینوفیکچرنگ پالیسی کی منظوری دیدی،پالیسی کے تحت موبائل فون کی تیاری اور اسمبلنگ پر مراعات دی جائیں گی ،350 ڈالر تک موبائل ڈیوائس کی تیاری اور اسمبلنگ پر فکسڈ انکم ٹیکس ختم ہوگا، 351 سے 500 ڈالر مالیت کی


موبائل ڈیوائس پر فکسڈ انکم ٹیکس 2 ہزار روپے بڑھے گا ،500 ڈالر مالیت کے فون پر فکسڈ انکم ٹیکس6 ہزار 300 روپے تک بڑھایا جائیگا، موبائل ڈیوائسز کی  ملک میں تیاری اور اسمبلنگ پرفکسڈ سیلز ٹیکس ختم ہوگا درآمدی موبائل کی مس ڈیکلریشن ختم کرنے کے اقدامات کئے جائیں گے ،مقامی مینوفیکچررز کو موبائل برآمد کے لئے 3 فیصد آراینڈ ڈی الاونس دیا جائے گا ملک میں تیار ہونیو الے موبائل کی مقامی فروخت پر 4 فیصد ودہولڈنگ ٹیکس چھوٹ ہوگی حکومت موبائل فون کی مکمل تیاری اور اسمبلنگ کے درمیان فرق رکھے گی ای ڈی بی موبائل فون مینوفیکچرنگ پالیسی کے لئے سیکرٹریٹ کے فرائض انجام دے گا۔ای سی سی نے ایک بار پھر کپاس کی امدادی قیمت مقرر کرنے کی سمری مسترد کردی ،۔ذرائع کا کہنا ہے کہ وفاقی وزرا حماد اظہر اور شیخ رشید نے سمری کی مخالفت کی مشیر تجارت عبدالرزاق داؤد اور معاون خصوصی پٹرولیم ندیم بابر نے بھی مخالفت کی وزارت خزانہ کے حکام نے آئی ایم ایف پروگرام کو جواز بناکر سمری کی مخالفت کی سمری کی مخالفت کرنے والوں نے گندم کی امدادی قیمت بھی ختم کرنے کی تجویز دی بعض شرکاء نے رائے دی کہ گنے کی امدادی قیمت بھی حکومتوں کو مقرر نہیں کرنی چاہیے صوبائی حکومتیں کپاس کی مداخلتی قیمت مقرر کرسکتی ہیں وفاق حکومت کے کاشتکاروں کی سپورٹ جاری رکھے گی ای سی سی اجلاس میں سکوک بانڈز کی تقسیم کا معاملہ موخر کردیا گیا۔


موضوعات: