پاکستان میں 95فیصد معدنی ذخائر تاحال دریافت نہیں ہوسکے، ڈاکٹر ثمر مبارک مند

  بدھ‬‮ 18 مئی‬‮‬‮ 2022  |  17:23

مکوآنہ (این این آئی ) معروف سائنسدان ڈاکٹر ثمر مبارک مند نے کہا ہے کہ پاکستان قدرتی معدنیات کے خزانے سے مالامال ملک ہے تاہم 95فیصد معدنی ذخائرتاحال دریافت نہیں کئے جاسکے ہیں۔انہوں نے ان خیالات کا اظہار دوسری عالمی فزکس کانفرنس سے بطور مہمان خصوصی خطاب کرتے ہوئے کیا،

ڈاکٹر ثمر کا کہنا تھا کہ دورِ حاضر میں ایجوکیشن، ہیلتھ کیئر اور ڈیفنس سمیت مختلف شعبہ ہائے زندگی کیلئے فزکس کے علم کی اہمیت مسلمہ ہے۔ڈاکٹر ثمر نے ایئر یونیورسٹی کی ملک میں ریسرچ کلچر کیلئے اعلیٰ خدمات کو سراہتے ہوئے اسٹوڈنٹس کو تلقین کی کہ وہ جدید دور کے تقاضوں سے ہم آہنگ ہونے کیلئے اپنے آپ کو تیار کریں۔ایئر یونیورسٹی کے وائس چانسلر ایئر مارشل (ر)جاوید احمد نے اپنے خیرمقدمی خطاب میں ڈیپارٹمنٹ آف فزکس کی کاوشوں کو سراہتے ہوئے کہا کہ قوم کو ڈاکٹر ثمر مبارک مند جیسے قابل سائنسدان پر فخر ہے جنہوں نے ملکی دفاع کو ناقابل تسخیر بنانے کیلئے انتھک جدوجہد کی۔وائس چانسلر کا کہنا تھا کہ ایئر یونیورسٹی نے عالمی وبائ￿ کورونا کے دوران آن لائن ایجوکیشن سمیت مختلف اہم ایشوز پر دسترس حاصل کی۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ دوروزہ کانفرنس کے دوران رینیؤبل انرجی، کلائمیٹ چینج اور گلوبل وارمنگ جیسے عالمی ایشوز پر سیرحاصل بحث کی جائے گی۔انہوں نے مزید کہا کہ ایئر یونیورسٹی ملک میں ریسرچ کلچر کے فروغ کیلئے کوشاں ہے، عالمی رینکنگ کے حالیہ نتائج میں ایئر یونیورسٹی نے اپنا مقام بہتر بنایا ہے۔ انہوں نے کانفرنس کے شرکائ￿ کو آگاہ کیا کہ عنقریب یونیورسٹی کے تمام کیمپس کو سولر انرجی پر منتقل کردیا جائے گا۔



زیرو پوائنٹ

گھوڑا اور قبر

میرا سوال سن کر وہ ٹکٹکی باندھ کر میری طرف دیکھنے لگے‘ میں نے مسکرا کر سوال دہرا دیا‘ وہ غصے سے بولے ’’بھاڑ میں جائے دنیا‘ مجھے کیا لوگ آٹھ ارب ہوں یا دس ارب‘‘ میں نے ہنس کر جواب دیا’’ آپ کی بات سو فیصد درست ہے‘ ہمیں اس سے واقعی کوئی فرق نہیں پڑتا‘ ہمارے لیے صرف اپنی ....مزید پڑھئے‎

میرا سوال سن کر وہ ٹکٹکی باندھ کر میری طرف دیکھنے لگے‘ میں نے مسکرا کر سوال دہرا دیا‘ وہ غصے سے بولے ’’بھاڑ میں جائے دنیا‘ مجھے کیا لوگ آٹھ ارب ہوں یا دس ارب‘‘ میں نے ہنس کر جواب دیا’’ آپ کی بات سو فیصد درست ہے‘ ہمیں اس سے واقعی کوئی فرق نہیں پڑتا‘ ہمارے لیے صرف اپنی ....مزید پڑھئے‎