پولیس کا یونیفارم پہن کر اور مختلف افسران کا روپ دھار کر شہریوں کو لوٹنے والا رضا کار کروڑ پتی نکلا، تہلکہ خیز انکشاف

  جمعرات‬‮ 4 مارچ‬‮ 2021  |  23:20

مکوآنہ (این این آئی ) پولیس کا یونیفارم پہن کر اور مختلف افسران کے روپ دھار کر شہریوں کو لوٹنے والا رضا کار کروڑ پتی نکلا، تھانہ پیپلز کالونی پولیس نے نوابانوالہ سے مذکورہ ملزم کو گرفتار کر کے تفتیش شروع کر دی۔ پولیس ذرائع کے مطابق نوابانوالہ کا رہائشی پولیس رضا کار رانا محمد اکرم مختلف بھیس بدلتے ہوئے کبھی پولیساہلکار، فوڈ انسپکٹر اور کبھی مجسٹریٹ بن کر تاجروں اور سادہ لوح شہریوں کو ڈرا دھمکا کر لاکھوں روپے بٹور کر کروڑوں روپے مالیت کے چار گھروں، دو گاڑیوں اور بنک بیلنس بنا چکا ہے۔ بتایا جاتا ہے کہ


چند روز قبل مذکورہ رضا کار پولیس کی یونیفارم پہن کر مقامی تاجر سے لاکھوں روپے ہتھیار لئے تھے جس پر سی پی او کیپٹن (ر) سہیل چوہدری نے واقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے ایس ایچ او تھانہ پیپلز کالونی کو مذکورہ رضا کار رانا اکرم کی گرفتاری کا حکم دیا تھا، جس پر پیپلز کالونی پولیس نے مذکورہ قومی رضا کار کو نوابانوالہ سے گرفتار کر کے مختلف مقدمات میں شناخت پریڈ کیلئے جیل بھجوا دیا، تاہم آج اس کی اہلیہ نے عدالت میں رٹ دائر کرنے پر تھانہ پیپلز کالونی میں بیلف نے چھاپہ مارا تو شناخت پریڈ کیلئے بھجوانے پر برآمدگی نہ ہو سکی۔ یہ امر قابل ذکر ہے کہ کچھ عرصہ قبل تھانہ پیپلز کالونی کے سابق ایس ایچ او رضوان شوکت بھٹی نے جعلی مجسٹریٹ بن کر شہریوں کو لوٹنے کے الزام میں گرفتار کیا تو اگلے ہی روز اس کی اہلیہ نے عدالت سے رجوع کیا تو بیلف نے چھاپہ مار کر مذکورہ قومی رضا کار رانا اکرم کو برآمد کر لیا تھا تو پولیس کو ملزم سے سازباز کر کے معاملہ رفع دفع ہوا تھا۔ پولیس ذرائع کے مطابق ابتدائی تفتیش کے دوران پکڑے جانے والے قومی رضا کار کروڑوں روپے مالیت کے 4 گھروں، دو گاڑیوں اور لاکھوں روپے کا بینک بیلنس رکھتا ہے۔ پولیس کے مطابق مذکورہ قومی رضا کار مختلف روپ دھار کر عرصہ سے تاجروں اور شہریوں کو لوٹ مار کی وارداتوں میں ملوث پایا گیا ہے، پولیس مصروف تفتیش ہے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

جوں کا توں

چاچا چنڈ میرے کالج کے زمانے کا ایک کردار تھا‘ وہ ڈپریشن اور غربت کا مارا ہواخود اذیتی کا شکار ایک مظلوم شخص تھا‘ وہ دوسروں کی ہر زیادتی‘ ہر ظلم اور ہر توہین کا بدلہ اپنے آپ سے لیتا تھا‘ لوگوں نے ”چاچا چنڈ“ کے نام سے اس کی چھیڑ بنا لی تھی‘ پنجابی زبان میں تھپڑ ....مزید پڑھئے‎

چاچا چنڈ میرے کالج کے زمانے کا ایک کردار تھا‘ وہ ڈپریشن اور غربت کا مارا ہواخود اذیتی کا شکار ایک مظلوم شخص تھا‘ وہ دوسروں کی ہر زیادتی‘ ہر ظلم اور ہر توہین کا بدلہ اپنے آپ سے لیتا تھا‘ لوگوں نے ”چاچا چنڈ“ کے نام سے اس کی چھیڑ بنا لی تھی‘ پنجابی زبان میں تھپڑ ....مزید پڑھئے‎