عمران خان سے سبزی دال کی بجائے چرس، ہیروئین اور کوکین کے ریٹس پوچھیں، اویس نورانی نے وزیراعظم پر حیرت انگیزالزام عائد کر دیا

19  جنوری‬‮  2021

اسلام آباد ( آن لائن )جمعیت علمائے پاکستان کے رہنمااویس نورانی نے الیکشن کمیشن کے دفتر کے باہر احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے کہا ہے کہ یہ سلیکٹڈ کہتا تھا کہ مجھے 5 لوگ کہہ دے کہ گو عمران گو تو میں گھر چلا جاؤنگا ،آج عوام کی بڑی تعداد آگئی مگر اس کے باوجود یہ ٹس سے مس نہیں ہورہا ہے،آج الیکشن کمیشن

سے عوام حساب مانگنے آئینگے اور انصاف لے کر جائیں گے ،پاکستان کے دشمنوں کی پالیسیوں کو پروان چڑھانے کے لیے عمران خان کو لایا گیا ،عمران خان سے سبزی دال کی بجائے چرس، ہیروئین اور کوکین کے ریٹس پوچھیں،الیکشن کمیشن اف پاکستان بائیس کروڑ عوام کو نمائندہ ہے ،بائیس کروڑ عوام کے ووٹوں کے چور ہیں الیکشن حساب دے ،عمران خان دشمنوں کے ایجنڈے پر کام کر رہا ہے ،عمران خان کو روزہ مرہ اشیا کے ریٹ کا پتہ نہیں لیکن نشہ اور چیزوں کے ریٹ پتہ ہیں۔احتجاجی مظاہرے سے خطاب کرتے ہوئے بلوچستان نیشنل پارٹی کے سربراہ اختر مینگل نے کہا کہ جس آئین کی بنیاد پر یہ ملک کھڑا ہے یہ عوام اسی آئین کی بالادستی چاہتی ہے ،افسوس اس ملک کے حکمرانوں ، اسٹیبلشمنٹ نے اپنے جوتوں اور بوٹوں تلے اسی آئین کو روندا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر اس کیس میں کسی چھوٹے صوبے کی جماعت ہوتی تو کب کا اس کی قیادت کو لٹکا دیا جاتا ۔ انہوں نے کہا کہ فارن فنڈنگ کے الزام پر ہی عوامی نیشنل پارٹی پر پابندی لگا کر ان قائدین کو صوبوں تک محدود کردیا ۔ انہوں نے کہا کہ انصاف کہاں ہورہا ہے ؟ اگر کسی کے انصاف دیکھنا ہے تو بلوچستان کی حالت دیکھ لیں ۔ انہوں نے کہا کہ جس ترازو میں انصاف فراہم کیا جانا تھا اس میں ہمارے بچوں کی لاشوں کے لوتھڑے، بزرگوں کی

پگڑیاں اور خواتین کی عصمتیں تولی جاتی ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ جب تک مساوی حقوق فراہم نہیں کیے جاتے اس وقت تک یہ گاڑی آگے نہیں چلے گی ۔ اختر مینگل نے جعلی آپریشنز کو ختم کرنے کا مطالبہ کیا ۔عوامی نیشنل پارٹی کے رہنماء امیر حیدر خان ہوتی نے کہا کہ اگر فارن فنڈنگ کیس کا فیصلہ7سال پہلے ہوجاتا تو آج یہاں ہم

احتجاج نہ کررہے ہوتے ۔ انہوں نے کہا کہ اگر ایک منتخب وزیراعظم کو جے آئی ٹی کے ذریعے چھ ماہ میں نااہل قرار دیا جاسکتا ہے تو پھر 7سال بعد کیوں یہ کیس التوا کا شکار ہے۔ جمعیت اہلحدیث کے سربراہ ساجد میر نے کہا کہ الیکشن قوانین کے مطابق غیر ملکی فنڈنگ نہیں لے سکتی،مگر نام نہاد حکمران جماعت نے اسرائیل اور بھارت

جیسے دشمنوں سے فنڈنگ لی ہے۔نیشنل پارٹی کے میر کبیر احمد شاہی نے کہا کہ نیشنل عوامی پارٹی پر بیرونی فنڈنگ کے باعث پابندی لگائی گئی مگر آج 7سال سے کیوں تحریک انصاف کا فیصلہ نہیں کیا جارہا ۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف خود اعتراف کرچکی ہے کہ فارن فنڈنگ ہوئی مگر پھر تاخیر کیوں کی جارہی ہے ؟۔

موضوعات:



کالم



مرحوم نذیر ناجی(آخری حصہ)


ہمارے سیاست دان کا سب سے بڑا المیہ ہے یہ اہلیت…

مرحوم نذیر ناجی

نذیر ناجی صاحب کے ساتھ میرا چار ملاقاتوں اور…

گوہر اعجاز اور محسن نقوی

میں یہاں گوہر اعجاز اور محسن نقوی کی کیس سٹڈیز…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے (آخری حصہ)

میاں نواز شریف کانگریس کی مثال لیں‘ یہ دنیا کی…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے

بودھ مت کے قدیم لٹریچر کے مطابق مہاتما بودھ نے…

جنرل باجوہ سے مولانا کی ملاقاتیں

میری پچھلے سال جنرل قمر جاوید باجوہ سے متعدد…

گنڈا پور جیسی توپ

ہم تھوڑی دیر کے لیے جنوری 2022ء میں واپس چلے جاتے…

اب ہار مان لیں

خواجہ سعد رفیق دو نسلوں سے سیاست دان ہیں‘ ان…

خودکش حملہ آور

وہ شہری یونیورسٹی تھی اور ایم اے ماس کمیونی کیشن…

برداشت

بات بہت معمولی تھی‘ میں نے انہیں پانچ بجے کا…

کیا ضرورت تھی

میں اتفاق کرتا ہوں عدت میں نکاح کا کیس واقعی نہیں…