حکومتی افواہ ساز فیکٹریوں سے کوئی گھبراہٹ نہیں،مولانا فضل الرحمن کے ساتھ لاکھوں کارکنوں کا نیب جانے کا فیصلہ،حیرت انگیز اعلان

  جمعہ‬‮ 25 ستمبر‬‮ 2020  |  17:38

کراچی(این این آئی)جمعیت علما اسلام یوسی 6 منگھوپیر کے تحت نیا ناظم آباد کے مقامی لان میں تحفظ ختم نبوت ودفاع صحابہ کانفرنس کا انعقاد کیا گیا،جس میں ہزاروں افراد شریک ہوئے اور پنڈال کے باہر سڑکوں پر بھی بڑی تعداد میں لوگ موجود تھے، کانفرنس میں سابق ایم پی اے مفتی فضل غفور، مولاناراشد محمود سومرو، مولانا محمد غیاث،قاری محمدعثمان،مولانا عمرصادق،اسلم غوری،مولانا فخرالدین رازی،سیداکبر شاہ ہاشمی نے خطاب کئے جبکہ نیک امان اللہ محسود، ڈاکٹر نصیرالدین سواتی،حافظ حبیب الرحمن خاطر، مولانا سمیع الحق سواتی، مفتی خالد محسود، مولانا حبیب الرزاق، گل فیروزخان محسود، مولانا فضل مولی سبحانی، مولانا عابداللہ،


مولانااحسان اللہ عادل، قاری سعید مہمند، قاری نظر الرحمن،مولانا حسین اللہ،اعجاز سواتی، ڈاکٹر غلام بادشاہ،مولانا عارف اللہ، مفتی امداداللہ، کمال بادشاہ، سرعبداللہ سمیت مقامی علما کرام، سابقہ بلدیاتی نمائندے اور معززین بھی موجود تھے، اس موقع پر مختلف سیاسی جماعتوں سے تعلق رکھنے 200 سے زائد افراد نے باقاعدہ جے یوآئی میں شمولیت اختیار کرلی جنہیں مفتی فضل غفور،مولانا راشدسومرو،قاری عثمان ودیگر نے جے یو آئی پرچم والی ٹوپیاں پہنائی۔اپنے خطاب میں مولانا راشد محمود سومرو اور مفتی فضل غفور نے کہا کہ عقیدہ ختم نبوت اور صحابہ کرام کے ناموس کے تحفظ کیلئے ہر دم تیار وبیدار ہیں، مولانا فضل الرحمن کی نیب طلبی کی باتیں حکومتی بوکھلاہٹ ہے،مولانا فضل الرحمن اکیلے نہیں لاکھوں کارکن ساتھ چلیں گے، ہمیں حکومتی افواہ ساز فیکٹریوں سے کوئی گھبراہٹ نہیں، 29 اکتوبرکو کو باغ جناح کا جلسہ کٹھ پتلی نااہل حکمرانوں کے خلاف ریفرنڈم اور حقیقی جمہوریت کی بنیاد ثابت ہوگا،ظلم، کرپشن، نا انصافی اور بے روزگاری کی انتہا سے نا اہل حکمران اپنا حق حکمرانی کھو چکے ہیں، مولانافضل الرحمنبہت جلد عوامی طاقت سے غریب دشمن سیاسی کلچر کو ذبح کر دیں گے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

صرف تین ہزار روپے میں

دنیا میں جہاں بھی اردو پڑھی جاتی ہے وہاں لوگ مختار مسعود کو جانتے ہیں‘ مختار مسعود بیورو کریٹ تھے‘ ملک کے اعلیٰ ترین عہدوں پر رہے‘ لاہور کا مینار پاکستان ان کی نگرانی میں بنا‘ یہ اس وقت لاہور کے ڈپٹی کمشنر تھے‘ چارکتابیںلکھیںاور کمال کر دیا‘ یہ کتابیں صرف کتابیں نہیں ہیں‘ یہ تاریخ‘ جغرافیہ اور پاکستان کے ....مزید پڑھئے‎

دنیا میں جہاں بھی اردو پڑھی جاتی ہے وہاں لوگ مختار مسعود کو جانتے ہیں‘ مختار مسعود بیورو کریٹ تھے‘ ملک کے اعلیٰ ترین عہدوں پر رہے‘ لاہور کا مینار پاکستان ان کی نگرانی میں بنا‘ یہ اس وقت لاہور کے ڈپٹی کمشنر تھے‘ چارکتابیںلکھیںاور کمال کر دیا‘ یہ کتابیں صرف کتابیں نہیں ہیں‘ یہ تاریخ‘ جغرافیہ اور پاکستان کے ....مزید پڑھئے‎