سرکاری ریسٹ ہاؤسز پرائیویٹ شعبہ کودینے کا فیصلہ،تعمیرات  میں  استعمال  شدہ میٹریل پر ٹیکس ختم  کرنے کی تیاریاں،گھروں پر نکس ٹیکس کی منظوری دیدی گئی

  جمعرات‬‮ 5 دسمبر‬‮ 2019  |  23:11

اسلام آباد(آن لائن) وزیراعظم کی معاون خصوصی برائے اطلاعات ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا ہے کہ حکومت نے سرکاری ریسٹ ہاؤسز پرائیویٹ شعبہ میں دینے یا لیز کرنے کا فیصلہ کر لیا ہے، جبکہ ضروری اشیاء کے خوردنوش کے ریٹس  چاروں  صوبوں میں کم اور یکساں رکھنے کیلئے وفاقی سطح پر کمیٹی بنانے کا فیصلہ کیا ہے، ایک دوسرے اجلاس میں ایف بی آر کو وزیراعظم کی طرف سے ہدایت کی گئی ہے کہتعمیرات کے حوالے سے استعمال ہونے والے میٹریل پر ٹیکس ختم یا کم کر دیا جائے۔ علاوہ ازیں کیپٹل ویلیو ٹیکس کی شرح کم کرنے اور


تعمیر شدہ گھروں پر نکس ٹیکس کے نفاد کی بھی منظوری دی گئی ہے وہ مقامی ہوٹل میں ایک تقریب سے پہلے میڈیا سے گفتگو کر رہے تھے، انہوں نے بتایا کہ ملک مین ڈیجیٹل پاکستان کی بنیاد رکھ دی گئی ہے، جس سے نہ صرف اطلاعات تک رسائی ہو گی بلکہ ملک جدید تقاضوں سے ہم آہنگ کرتے ہوئے ملک میں کاروبار کو آسان اور بے روزگاری کا خاتمہ ہو گا، جبکہ قبضہ گروپ کے خاتمہ اور دو نمبری کی حوصلہ شکنی کیلئے اس اشٹام بھی شروع کیا جارہا ہے، پرائز کنٹرول میکانزم بنانے کے حوالے سے انہوں نے کہا کہ ڈیمانڈ کو بروقت پورا کرنے کیلئے بھی ایک کمیٹی تشکیل دی گئی ہے، جس میں منصوبہ بندی، خوراک اور تجارت کے وزراء شامل ہونگے اور وقت سے پہلے ہی ڈیٹا کی مدد سے سپلائی کو موثر بنانے کیلئے اقدامات کرنے کی حکمت عملی بنائیں گے، انہوں نے اپوزیشن کو تنقید کا نشانہ بناتے ہوئے کہا کہ جو پاکستان صرف حکمرانی کرنے آتے ہیں باقی انکی اولاد، جائیداد اور کاروبار سب باہر ہیں ِ اب انہوں نے نئی روایت کے تحت اجلاس بھی بیرون ملک میں بلانے شروع کر دیئے ہیں، ججز کی تعیناتی کے حوالے سے وہاں اجلاس کے بعد واپسی پر اپوزیشن رہنما نیا چورن لے کر آئیں گے لیکن ان کا چورن اب بکنے والا نہیں ہے۔


موضوعات: