ڈی چوک دھرنے کے دوران طاہر القادری کیلئے کفن کس نے خریدے اور ادائیگی کس کی جانب سے کی گئی تھی؟بڑا دعویٰ سامنے آگیا

  منگل‬‮ 15 اکتوبر‬‮ 2019  |  11:42

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)جے یو آئی (ف) کی جانب سے 31اکتوبر کو آزادی مارچ کا اعلان کیا گیا ہے ، جس کے سلسلے میں تیاریاں جاری ہیں ، حکومت بھی اس مارچ کو ناکام بنانے کیلئے سرگرم ہے ، اسی حوالے سے نجی ٹی وی پروگرام میںگفتگو کرتے ہوئے سینئر تجزیہ کار سلیم صافی نے کہا کہ جے یو آئی ف کے گزشتہ تمام ملین مارچز میں ڈسپلن کی ذمہ داری ان کی ڈنڈا بردار فورس کے پاس ہی ہوتی تھی، ابھی تک ڈنڈا بردارفورس کی طرف سے نہ کوئی قانون شکنی سامنے آئی ہے نہ ان کے خلاف کوئی ایف آئی آر


درج ہوئی ہے۔انہوں نے کہا کہ طاہر القادری کیلئے کفن اجمل وزیر نے خریدے تھے جب کہ اس کی ادائیگی ق لیگ نے کی تھی۔سلیم صافی کا کہنا تھا کہ مولانا فضل الرحمن مذہب کارڈ استعمال کرتے ہیں تو ہم مذمت کریں گے، ہر پارٹی کے جلسوں میں جھنڈے ہوتے ہیں اور کوئی جھنڈا ڈنڈے کے بغیر نہیں ہوتا ہے، ڈنڈے کا غلط اور خلاف قانون استعمال کیا جاتا ہے تو وہ قابل مذمت ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ مولانا فضل الرحمن تمام تر نامساعد حالات اور طالبان کے حملوں کے باوجود کبھی مایوس نہیں ہوئے، اپوزیشن نہ میڈیا نہ پارلیمنٹ کے ذریعہ احتجاج کرسکتی ہے نہ ان کی شکایات رفع ہوسکی ہیں، اس لئے ان کے پاس احتجاج کے سوا کوئی راستہ نہیں رہا۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

روکا روکی کا کھیل

میں آج سے چھ سال پہلے بائی روڈ اسلام آباد سے ملتان گیا تھا‘ وہ سفر مشکل اور ناقابل برداشت تھا‘ رات لاہور رکنا پڑا‘ اگلی صبح نکلے تو ملتان پہنچنے میں سات گھنٹے لگ گئے‘ سڑک خراب تھی اور اس کی مرمت جاری تھی لہٰذا گرمی‘ پسینہ اور خواری بھگتنا پڑی‘ ہفتے کے دن چھ سال بعد ایک بار ....مزید پڑھئے‎

میں آج سے چھ سال پہلے بائی روڈ اسلام آباد سے ملتان گیا تھا‘ وہ سفر مشکل اور ناقابل برداشت تھا‘ رات لاہور رکنا پڑا‘ اگلی صبح نکلے تو ملتان پہنچنے میں سات گھنٹے لگ گئے‘ سڑک خراب تھی اور اس کی مرمت جاری تھی لہٰذا گرمی‘ پسینہ اور خواری بھگتنا پڑی‘ ہفتے کے دن چھ سال بعد ایک بار ....مزید پڑھئے‎