شاہد خاقان عباسی نے لائیو شو میں عمران خان کو دھمکی دے ڈالی،کیا کہا؟ مزید جانئے

11  ستمبر‬‮  2016

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر مملکت برائے پٹرولیم شاہد خاقان عباسی نے لائیو ٹی وی شو میں عمران خان کو دھمکی دیتے ہوئے کہا کہ گھر سب کے ہوتے ہیں، شرافت کی حدود میں رہ کر سیاست کریں اگر بدتمیزی کریں گے تو جواب میں بھی بدتمیزی ہی ملے گی۔

تفصیلات کے مطابق نجی ٹی وی چینل کے پروگرام میں سینیئر صحافی اور اینکر پرسن سید طلعت حسین نے جب شاہد خاقان عباسی سے پی ٹی آئی کے رائیونڈ جلسے اور دھرنے کے بارے میں سوال کرتے ہوئے پوچھا کہ عمران خان کہہ رہے ہیں کہ اس بار اس معاملے کو منطقی انجام تک پہنچائیں گے تو انہوں نے رد عمل دیتے ہوئے کہا کہ سیاست میں منطقی انجام  کوئی نہیں ہوتا۔ منطقی انجام سیاست میں صرف الیکشن ہوتا ہے اور وہ ستمبر 2018 کا الیکشن ہو گاپی ٹی آئی کو چاہئے کہ اپنی توجہ ادھر مرکوز کریں ، اپنی کارکردگی دکھائیں ، عوام کا فیصلہ دیکھ لیں گے ان کے پاس بھی حکومت ہے ہمارے پاس بھی ہے اور پیپلز پارٹی کے پاس بھی ہے۔ عوام جو فیصلہ کرے گی وہ سب کے سامنے آجائے گا ۔

انہوں نے مزید کہا کہ سیاست کرنی ہے تو سیاست کریں ، گھر سب کے ہیں ، گھر کا تحفظ ہر شخص کرتا ہے اور کرے گا۔ انہوں نے اس بات کو دہراتے ہوئے کہا کہ ضرور کرے گا۔ اگر آپ نے سیاست کرنی ہے تو سیاست کریں ، جلسے صرف جلسہ کرنے کی جگہ پر کریں، اگر بدتمیزی کریں تو بدتمیزی واپس ملے گی ، عمران خان شرافت کی حدوں میں سیاست کریں،وہاں رہیں جو ماحول ہے سیاست کا ویسی ہی سیاست کریں ، وہ جو انجام چاہتے ہیں بتا دیں ،  یہاں فوج نہیں آئے گئی ، ستمبر 2018 میں انجام دیکھ لیں گے ، نتیجہ سب کے سامنے آجائے گا۔

موضوعات:



کالم



مرحوم نذیر ناجی(آخری حصہ)


ہمارے سیاست دان کا سب سے بڑا المیہ ہے یہ اہلیت…

مرحوم نذیر ناجی

نذیر ناجی صاحب کے ساتھ میرا چار ملاقاتوں اور…

گوہر اعجاز اور محسن نقوی

میں یہاں گوہر اعجاز اور محسن نقوی کی کیس سٹڈیز…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے (آخری حصہ)

میاں نواز شریف کانگریس کی مثال لیں‘ یہ دنیا کی…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے

بودھ مت کے قدیم لٹریچر کے مطابق مہاتما بودھ نے…

جنرل باجوہ سے مولانا کی ملاقاتیں

میری پچھلے سال جنرل قمر جاوید باجوہ سے متعدد…

گنڈا پور جیسی توپ

ہم تھوڑی دیر کے لیے جنوری 2022ء میں واپس چلے جاتے…

اب ہار مان لیں

خواجہ سعد رفیق دو نسلوں سے سیاست دان ہیں‘ ان…

خودکش حملہ آور

وہ شہری یونیورسٹی تھی اور ایم اے ماس کمیونی کیشن…

برداشت

بات بہت معمولی تھی‘ میں نے انہیں پانچ بجے کا…

کیا ضرورت تھی

میں اتفاق کرتا ہوں عدت میں نکاح کا کیس واقعی نہیں…