حفیظ سنٹر میں آتشزدگی ، صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد موقع پر پہنچیں تو ایسے نعرے لگ گئے کہ وہاں سے واپسی کی راہ لی

  اتوار‬‮ 18 اکتوبر‬‮ 2020  |  15:57

لاہور( این این آئی،مانیٹرنگ ڈیسک)صوبائی دارالحکومت لاہور کے علاقے گلبرگ میں واقع حفیظ سنٹر پلازے میں خوفناک آتشزدگی سے سینکڑوں دکانیں جل کر خاکستر ہو گئیں،آتشزدگی سے کروڑوں روپے نقصان کا تخمینہ لگایا گیا ہے ، اطلاعات کے مطابق آگ دوسرے فلورپر شارٹ سرکٹ سے لگی جس نے اوپر کے دو فلورز کو بھی اپنی لپیٹ میں لے لیا ، دکانوں میں موبائل فونز، لیپ ٹاپ ، کمپیوٹر ، بیٹریز ، کمپریسرز ، جنریٹرز اور ڈیزل موجود ہونے کی وجہ سے آگ نے شدت اختیار کی ،آتشزدگی کے دوران وقفے وقفے سے دھماکے بھی ہوتے رہے ، آتشزدگی کی اطلاع


ملنے پر تاجر او ران کے عزیز و اقارب جائے وقوعہ پر پہنچ گئے اور تاجر اپنا کاروبار جلتا ہو ا دیکھ کر دھاڑیں مار مار کر روتے رہے ،ریسکیو اور فائر بریگیڈ کی درجنوں گاڑیاں کئی گھنٹوں تک آگ پر قابو پانے کیلئے کوشاں رہیں جبکہ بعد ازاں آرمی کی آگ بجھانے والی گاڑیاں بھی طلب کر لی گئیں ، تاجروں نے احتجاج کرتے ہوئے کہا کہ ریسکیو 1122اور فائر بریگیڈ کی گاڑیوں میں بار بار پانی ختم ہوتا رہا ، اگر آگ بجھانے کیلئے مکمل انتظامات ہوتے تو اتنے وسیع پیمانے پر نقصان نہ ہوتا، وزیر اعلیٰ پنجاب سردار عثمان بزدار ریسکیو آپریشن کی خود مانیٹرنگ کرتے رہے، صوبائی وزیر صحت ڈاکٹر یاسمین راشد صورتحال کا جائزہ لینے کےلیے موقع پر پہنچیں تو نوازشریف زندہ باد اور حکومت مخالف نعروں سے ان کا استقبال کیا گیا جس کے بعد وہ وہاں سے واپس روانہ ہوگئیں ۔ ایڈیشنل چیف سیکرٹری داخلہ، کمشنر لاہور ڈویژن، ڈپٹی کمشنر ،ڈی جی ریسکیو ڈاکٹر رضوان نصیر ،سی سی پی او لاہور، ڈی آئی جی آپریشنزسمیت دیگر اعلیٰ حکام بھی جائے وقوعہ پر موجود رہے ، حکومت نے آتشزدگی کی تحقیقات کیلئے کمیٹی تشکیل دیدی جبکہ وزیر اعلیٰ پنجاب نے اعلان کیا ہے کہ تاجروں کے نقصان کا جائزہ لے کر اس کا ازالہ کیا جائیگا۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

میاں نواز شریف کے لیے مشورہ

لندن کے شمالی زون میں 20 جولائی کی رات ساڑھے آٹھ بجے ایک اور افسوس ناک واقعہ پیش آیا‘ عابد شیرعلی اور سلیمان شہباز اپنی فیملی کے ساتھ ترکش ریستوران (Gokyuzu) میں کھانا کھانے گئے‘ یہ لندن میں عید کی رات تھی‘ ریستوران میں ایک اور پاکستانی فیملی بھی بیٹھی تھی‘ دوسری فیملی کی بزرگ خاتون نے جاتے جاتے عابد ....مزید پڑھئے‎

لندن کے شمالی زون میں 20 جولائی کی رات ساڑھے آٹھ بجے ایک اور افسوس ناک واقعہ پیش آیا‘ عابد شیرعلی اور سلیمان شہباز اپنی فیملی کے ساتھ ترکش ریستوران (Gokyuzu) میں کھانا کھانے گئے‘ یہ لندن میں عید کی رات تھی‘ ریستوران میں ایک اور پاکستانی فیملی بھی بیٹھی تھی‘ دوسری فیملی کی بزرگ خاتون نے جاتے جاتے عابد ....مزید پڑھئے‎