بھارت کی لداخ میں چین کے ہاتھوں پسپائی ،امریکی جریدے کا انکشاف

  ہفتہ‬‮ 2 جنوری‬‮ 2021  |  23:54

نیویارک (آن لائن) امریکی جریدے نے دعوی کیا ہے کہ نریندر مودی سرکار میں بھارتی ناکامیوں کی طویل فہرست میں لداخ میں شکست بھی شامل ہوگئی۔غیر ملکی خبر رساں ادارے کے مطابق امریکی جریدے فارن پالیسی میگزین نے لکھا ہے کہ بھارت لداخ میں چین کے ہاتھوںپسپا ہوا۔ جبکہ بھارت چینی فوج کو پیچھے دھکیلنے میں ناکام رہا۔جریدے کے مطابق چار گنا بڑے دفاعی بجٹ اور چھ گنا بڑی معیشت والے چین کیساتھ معاشی طور پر غیر مستحکم بھارت محاذ آرائی کا متحمل نہیں ہوسکتا ،اور نہ ہی کوئی طویل جنگ لڑنے کے قابل ہے۔فارن پالیسی میگزین نے مزید لکھا


بھارت کی جانب سے معاشی پابندیاں چین کیلئے کوئی معنی نہیں رکھتیں ہیں چین کے ساتھ جنگ سے بھارت کو اپنی مختارانہ خارجہ پالیسی سے ہاتھ دھونا پڑسکتا ہے۔واضح رہے کہ گزشتہ مئی ، لداخ میں سرحدی دراندازی کرکیاشتعال انگیزی کے نتیجے میں 20 بھارتی فوجی مارے گئے۔ جس کے بعد لداخ کے علاقے میں ماحول کافی گرم ہوگیا تھا۔ یہاں تک کہ سوشل میڈیا پر وادی گلوان کے بارے میں بھی کہاگیا کہ اس کے اہم ترین علاقے پینگونگ جھیل جس کی شہرت عامر خان کی تھری ایڈیٹس فلم تھی ، وہ اب چین کے قبضے میں آچکی ہے.یہ دعویٰ چین کی ایک سیاحتی کمپنی نے ایک ویڈیو سوشل میڈیا پر ریلیز کرکے کیا تھا ، تاہم چین کی جانب سے اس کے بارے میں کوئی تصدیق نہیں کی گئی ، جبکہ چین نے علاقے کی اہم ترین پہاڑی چوٹیوں پر اپنی پوزیشنیں مضبوط کر لی تھیں۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

آخری موو

سینیٹ کا الیکشن کل اور پلاسی کی جنگ 23 جون 1757ءکو ہوئی اور دونوںنے تاریخ پر اپناگہرا نقش چھوڑا‘ بنگال ہندوستان کی سب سے بڑی اور امیر ریاست تھی‘پورا جنوبی ہندوستان نواب آف بنگال کی کمان میں تھا‘ سراج الدولہ بنگال کا حکمران تھا‘ دوسری طرف لارڈ رابرٹ کلائیو کمپنی سرکار کی فوج کا کمانڈر تھا‘ انگریز کے ....مزید پڑھئے‎

سینیٹ کا الیکشن کل اور پلاسی کی جنگ 23 جون 1757ءکو ہوئی اور دونوںنے تاریخ پر اپناگہرا نقش چھوڑا‘ بنگال ہندوستان کی سب سے بڑی اور امیر ریاست تھی‘پورا جنوبی ہندوستان نواب آف بنگال کی کمان میں تھا‘ سراج الدولہ بنگال کا حکمران تھا‘ دوسری طرف لارڈ رابرٹ کلائیو کمپنی سرکار کی فوج کا کمانڈر تھا‘ انگریز کے ....مزید پڑھئے‎