دنیا کی مہنگی ترین بھیڑ، انتہائی مہنگے داموں فروخت پر تمام ریکارڈ ٹوٹ گئے

  ہفتہ‬‮ 29 اگست‬‮ 2020  |  10:18

گلاسگو (آن لائن) برطانیہ کے شہر گلاسگو میں ایک مخصوص نسل کی بھیڑ کی تین لاکھ سے زائد پاؤنڈز میں فروخت نے تمام ریکارڈ توڑ دیے۔خبر رساں ادارے گارڈین کے مطابق ڈبل ڈائمنڈ نامی بھیڑ کی نیلامی شروع ہوتے ہی بولیاں لگنا شروع ہو گئیں اور چند منٹوں میں ایک گاہک نے 3 لاکھ 67 ہزار 500 پاؤنڈ کی آفر پر مخصوص نسل کی بھیڑ خرید لیجس کی پاکستانی روپوں میں قیمت آٹھ کروڑسے زیادہ بنتی ہے۔ڈبل ڈائمنڈ برطانوی شہر چیشائر کی ایک فیملی نے فروخت کی ہے۔ہلکے سنہری رنگ کی اس بھیڑ پر شہری جیف ایکن کی کئی ہفتوں


سے نظر تھی جو خود بھی جانوروں کی نسل کی افزائش کرتے ہیں۔جیف ایکن نے ڈبل ڈائمنڈ کی خرید پر اتنی بھاری رقم ادا کر کہ نیا ریکارڈ قائم کیا ہے۔ اس سے قبل کسی بھی بھیڑ کو اتنی زیادہ قیمت میں نہیں خریدا گیا۔ڈبل ڈائمنڈ کا تعلق بھیڑوں کی ’ٹیکسل‘ نامی مخصوص نسل سے ہے جو نیدرلینڈز کے قریب ٹیکسل نامی جزیرے میں پائی جاتی ہیں۔اس نایاب نسل کی بھیڑ کی بے حد مانگ ہے اور عموماً ہزاروں میں بکتی ہے لیکن ڈبل ڈائمنڈ کے منظر عام پر آنے سے اس کی قیمت میں یکدم اضافہ ہوا ہے۔چھ ماہ کی عمر کی ڈبل ڈائمنڈ کے بارے میں جیف ایکن کا کہنا ہے کہ یہ انتہائی شاندار جانور ہے اور سب سے بہترین جینز موجود ہیں۔ برطانیہ کے شہر گلاسگو میں ایک مخصوص نسل کی بھیڑ کی تین لاکھ سے زائد پاؤنڈز میں فروخت نے تمام ریکارڈ توڑ دیے۔خبر رساں ادارے گارڈین کے مطابق ڈبل ڈائمنڈ نامی بھیڑ کی نیلامی شروع ہوتے ہی بولیاں لگنا شروع ہو گئیں اور چند منٹوں میں ایک گاہک نے 3 لاکھ 67 ہزار 500 پاؤنڈ کی آفر پر مخصوص نسل کی بھیڑ خرید لی جس کی پاکستانی روپوں میں قیمت آٹھ کروڑ سے زیادہ بنتی ہے۔ڈبل ڈائمنڈ برطانوی شہر چیشائر کی ایک فیملی نے فروخت کی ہے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

سرعام پھانسی

مجھے چند سال پہلے اپنے ایک دوست کے ساتھ اس کے گاﺅں جانے کا اتفاق ہوا‘ یہ پنجاب کے ایک مشہور گاﺅں کے چودھری ہیں‘ میں ان کے مہمان خانے میں ٹھہرا ہوا تھا‘ سردیوں کے دن تھے‘ میں صبح اٹھا تو مہمان خانے کے صحن میں پنچایت ہو رہی تھی‘میں نے کھڑکی کھولی اور کارروائی دیکھنے لگا‘ ....مزید پڑھئے‎

مجھے چند سال پہلے اپنے ایک دوست کے ساتھ اس کے گاﺅں جانے کا اتفاق ہوا‘ یہ پنجاب کے ایک مشہور گاﺅں کے چودھری ہیں‘ میں ان کے مہمان خانے میں ٹھہرا ہوا تھا‘ سردیوں کے دن تھے‘ میں صبح اٹھا تو مہمان خانے کے صحن میں پنچایت ہو رہی تھی‘میں نے کھڑکی کھولی اور کارروائی دیکھنے لگا‘ ....مزید پڑھئے‎