امریکی سفارت کار وں پر انوکھے حملے،اپنی سماعت کھو بیٹھے

  اتوار‬‮ 13 اگست‬‮ 2017  |  19:00

واشنگٹن(این این آئی)امریکی وزیر خارجہ ریکس ٹیلرسن نے کیوبا سے مطالبہ کیا ہے کہ امریکی سفارت کاروں کو جن صوتی حملوں کا نشانہ بنایا گیا اْن سے متعلق حالات اور واقعات کو منظر عام پر لایا جائے۔میڈیارپورٹس کے مطابق ایک صحافی کے سوال کا جواب دیتے ہوئے وزیر خارجہ کا کہنا تھا کہ یہ بتانا واشنگٹن کے بس میں نہیں کہ ان پراسرار صوتی حملوں کا ذمے دار کون ہے۔ ٹیلرسن نے اس امید کا اظہار کیا کہ کیوبا کے حکام اس بات کو ضرور معلوم کرلیں گے کہ یہ حملے کون کر رہا ہے جو نہ صرف امریکی بلکہ

دیگر ممالک کے سفارت کاروں کی جان کے لیے خطرہ ہیں۔واضح رہے کہ واقعے کے بعد ہوانا میں متعین امریکی سفارت کار کیوبا سے کوچ کر گئے ہیں۔اگرچہ اس پراسرار معاملے کا انکشاف رواں ہفتے سامنے آیا ہے تاہم اس کے ڈانڈے چند ماہ پہلے سے ملتے ہیں۔ رواں برس 23 مئی کو امریکا نے مزید کسی وضاحت کا انتظار کیے بغیر واشنگٹن سے کیوبا کے دو سفارت کاروں کو نکال دیا تھا۔

موضوعات:

آج کی سب سے زیادہ پڑھی جانے والی خبریں