تحریک انصاف کے مزید کارکنوں نے فوج مخالف مہم کا حصہ بننے کا اعتراف کرلیا

  جمعرات‬‮ 11 اگست‬‮ 2022  |  15:41

اسلام آباد (این این آئی) پاکستان تحریک انصاف کے مزید کارکنوں نے فوج مخالف مہم کا حصہ بننے کا اعتراف کرلیا ۔ میڈیا رپورٹ کے مطابق گوجرانوالہ کی سیدہ طیبہ بخاری نے بھی پارٹی قیادت کے بیانیے سے لاتعلقی ظاہر کر دی،ٹویٹر پر مارخور میڈیا نیٹ ورک پیج کی

بانی کا غلطی سے فوج مخالف پوسٹ کرنے کا اعتراف کرلیا ۔ پی ٹی آئی کارکن نے کہاکہ فوج کے بارے میں غلط پوسٹ شئیر کرنے پر معذرت،آئندہ ایسا نہیں ہو گا۔پتوکی سے تعلق رکھنے والے محمد اعظم نے بھی سوشل میڈیا پر فوج مخالف پوسٹ کا اعتراف کرلیا اور کہاکہ آئندہ ایسی کوئی پوسٹ نہیں کروں جس سے نفرت پھیلے۔دوسری جانب اسلام آباد ہائیکورٹ نے ممنوعہ فڈنگ کیس میں پی ٹی آئی سیکرٹریٹ ملازمین کو جاری ایف آئی اے نوٹسز کے خلاف درخواست نمٹا دی۔ جمعرات کو قائم مقام چیف جسٹس عامر فاروق نے چار صفحات پر مشتمل تحریری فیصلہ جاری کر دیا اور کہاکہ جن نوٹسز کے خلاف درخواست دائر کی گئی ان پر عملدرآمد ہو چکا ہے۔ فیصلہ میں کہاگیاکہ ملازمین کے نوٹسز کا جواب دینے اور شامل تفتیش ہونے کے بعد درخواست غیرموثر ہو گئی۔اسلام آباد ہائیکورٹ نے ایف آئی اے کو آئندہ کسی کو نوٹس جاری کرتے وقت احتیاط برتنے کا حکم کر دیا ۔ فیصلے میں کہاگیاکہ درخواست گزار وکیل کے مطابق نوٹسز اسلام آباد ہائیکورٹ کے حکم اور اپنے سرکلر کی خلاف ورزی میں جاری کیے۔ فیصلہ کے مطابق ریکارڈ کے مطابق ایف آئی اے کا سرکلر صرف سائبر کرائم ونگ کیلئے جاری کیا گیا تھا۔اسلام آباد ہائیکورٹ نے کہاکہ ایف آئی اے آئندہ اپنے نوٹسز میں مناسب مطلوبہ معلومات فراہم کرے۔



موضوعات:

زیرو پوائنٹ

ہم کوئلے سے پٹرول کیوں نہیں بناتے؟

پروفیسر اطہر محبوب اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور کے وائس چانسلر ہیں‘ یہ چند دن قبل اسلام آباد آئے‘ مجھے عزت بخشی اور میرے گھر بھی تشریف لائے‘ یہ میری ان سے دوسری ملاقات تھی‘ پروفیسر صاحب پڑھے لکھے اور انتہائی سلجھے ہوئے خاندانی انسان ہیں‘ مجھے مدت بعد سلجھی اور علمی گفتگو سننے کا موقع ملا اور میں ابھی تک اس ....مزید پڑھئے‎

پروفیسر اطہر محبوب اسلامیہ یونیورسٹی بہاولپور کے وائس چانسلر ہیں‘ یہ چند دن قبل اسلام آباد آئے‘ مجھے عزت بخشی اور میرے گھر بھی تشریف لائے‘ یہ میری ان سے دوسری ملاقات تھی‘ پروفیسر صاحب پڑھے لکھے اور انتہائی سلجھے ہوئے خاندانی انسان ہیں‘ مجھے مدت بعد سلجھی اور علمی گفتگو سننے کا موقع ملا اور میں ابھی تک اس ....مزید پڑھئے‎