امریکہ نے ہمارے سونامی ٹری فراڈ والے عمران نیازی کو مدعو نہیں کیا، ماحولیاتی سمٹ میں پاکستان کو مدعونہ کرنے پر وزیراعظم پرشدید تنقید

  ہفتہ‬‮ 27 مارچ‬‮ 2021  |  21:56

لاہور(آن لائن)پاکستان مسلم لیگ (ن) کے جنرل سیکرٹری احسن اقبال نے امریکا کی جانب سے پاکستان کو عالمی ماحولیاتی سمٹ میں مدعو نہ کرنے پر حکومت کو آڑے ہاتھوں لے لیا۔احسن اقبال کا سماجی رابطوں کی ویب سائیٹ ٹوئٹر پر ا پنے ٹوئٹ میں کہنا تھاکہ ’امریکی صدر ماحولیاتی تبدیلی پر سربراہی اجلاس کیلئے 40 سربراہان کومدعو کیا لیکن ہمارے سونامی ٹری فراڈ والے عمران نیازی کو مدعو نہیں کیا‘۔ واضح رہے کہ امریکا نے ماحولیاتی آلودگی کو ختم کرنے کی پاکستانی کوششوں کو عالمی سطح پر نظر انداز کردیا۔ میڈیارپورٹس کے مطابق آئندہ ماہ ماحولیاتی تبدیلی پر امریکا میں


عالمی سمٹ کا انعقاد ہورہا ہے جس میں صدر جوبائیڈن نے 40 ملکوں کے سربراہان کو دعوت نامے ارسال کیے ہیں۔پاکستان کے پڑوسی ممالک بھارت، چین، بنگلہ دیش کے سربراہان کو بھی سمٹ میں مدعو کرلیا گیا لیکن حیران کن طور پر سمٹ میں پاکستان کو دعوت نہیں دی گئی۔ رپورٹس کے مطابق معاون خصوصی امین اسلم نے کہا کہ پاکستان ان دو کیٹگریز میں شامل نہیں جس کے باعث دعوت نہیں ملی، وزارت خارجہ کو سمٹ کے حوالے سے وضاحت کرنے کا ٹاسک سونپ دیا گیا ہے۔واضح رہے کہ امریکی صدر جو بائیڈن کی میزبانی میں ماحولیاتی تبدیلی پر اپریل 22-23 کو آن لائن اجلاس ہوگا۔امریکی صدر جو بائیڈن نے روسی صدر ولادیمیر پوٹن اور چینی صدر شی جن پنگ سمیت دنیا کے تقریباً 40 رہنما ؤ ں کو اپریل میں مجوزہ ماحولیاتی تبدیلی کے حوالے سے سربراہی اجلاس میں شرکت کی دعوت دی ہے۔وائٹ ہا ؤ س کے مطابق یہ سربراہی کانفرنس 22 اور 23 اپریل کو ان لائن ہوگی۔ امید ہے کہ اس اجلاس سے زہریلی گیسوں کے اخراج میں  کمی سے متعلق کاوشوں کو سمت دینے اور ماحول دوست اقدامات میں تیزی پیدا کرنے میں مدد ملے گی۔امریکی صدر جوبائیڈن نے جرمن چانسلر، فرانسیسی صدر اور برطانوی وزیر اعظم سمیت سعودی عرب، بھارت اور ترکی کے رہنماؤں کو بھی سربراہی اجلاس میں مدعو کیا ہے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

استنبول یا دہلی ماڈل

میاں نواز شریف کے پاس دو آپشن ہیں‘ استنبول یا دہلی‘ ہم ان آپشنز کو ترکی یا انڈین ماڈل بھی کہہ سکتے ہیں۔ہم پہلے ترکی ماڈل کی طرف آتے ہیں‘ رجب طیب اردگان 1954ء میں استنبول میں قاسم پاشا کے علاقے میں پیدا ہوئے‘ غریب گھرانے سے تعلق رکھتے تھے‘ سکول سے واپسی پر گلیوں میں شربت بیچتے تھے‘بڑی مشکل ....مزید پڑھئے‎

میاں نواز شریف کے پاس دو آپشن ہیں‘ استنبول یا دہلی‘ ہم ان آپشنز کو ترکی یا انڈین ماڈل بھی کہہ سکتے ہیں۔ہم پہلے ترکی ماڈل کی طرف آتے ہیں‘ رجب طیب اردگان 1954ء میں استنبول میں قاسم پاشا کے علاقے میں پیدا ہوئے‘ غریب گھرانے سے تعلق رکھتے تھے‘ سکول سے واپسی پر گلیوں میں شربت بیچتے تھے‘بڑی مشکل ....مزید پڑھئے‎