وفاقی اداروں کے افسران نوکریاں چھوڑ دیں یا پھر۔۔۔۔۔ چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ کا شدید برہمی کا اظہار

  بدھ‬‮ 28 اکتوبر‬‮ 2020  |  23:39

لاہور( این این آئی )لاہور ہائیکورٹ نے کرونا سے ڈرنا نہیں لڑنا ہے کہ سلوگن کے خلاف کیس کی سماعت کے دوران اسلامی نظریاتی کونسل کی تجاویز کابینہ کے اجلاس میں پیش نہ کر نے پر برہمی کا اظہار کرتے ہوئے وفاقی سیکرٹری مذہبی اموراور وفاقی سیکرٹری اطلاعات کو آئندہ سماعت پر طلب کرلیا ۔چیف جسٹس لاہور ہائیکورٹ مسٹر جسٹس محمد قاسم خان نے درخواست پرسماعت کی ۔دوران سماعت وفاقی حکومت کے وکیل اسد باجوہ عدالت میں پیش ہوئے اور موقف اپنایا کہ کابینہ کو معاملہ بھجوانے کے لیے اقدامات کررہے ہیں ۔ چیف جسٹس نے اظہار برہمی کرتے ہوئے


کہا کہ وفاقی اداروں کے افسران کو کہیں نوکریاں چھوڑ دیں یا پھر کام کریں ۔ اسلامی نظریاتی کونسل نے کرونا سے ڈرنا نہیں لڑنا ہے کہ سلوگن کو استعمال کر نے سے روک دیا تھا،اسلامی نظریاتی کونسل نے حکومت کو نیا سلوگن جاری کرنے کے لیے معاملہ کابینہ کو بھجوایا تھا ،کونسل کی تجاویز کو کابینہ کے سامنے کیوں نہیں رکھا گیا ؟۔ چیف جسٹس مسٹر جسٹس محمد قاسم خان خان نے کہا کہ حیرت ہے15روز گزرنے کے بعد بھی عدالتی حکم پر عمل نہیں ہوا ۔فاضل عدالت نے کارروائی آئندہ ہفتے تک ملتوی کرتے ہوئے وفاقی سیکرٹری مذہبی امور اور وفاقی سیکرٹری اطلاعات کو آئندہ سماعت پر طلب کرلیا ۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

بڑے چودھری صاحب

انیس سو ساٹھ کی دہائی میں سیالکوٹ میں ایک نوجوان وکیل تھا‘ امریکا سے پڑھ کر آیا تھا‘ ذہنی اور جسمانی لحاظ سے مضبوط تھا‘ آواز میں گھن گرج بھی تھی اور حس مزاح بھی آسمان کو چھوتی تھی‘ یہ بہت جلد کچہری میں چھا گیا‘ وکیلوں کے ساتھ ساتھ جج بھی اس کے گرویدا ہو گئے‘ اس ....مزید پڑھئے‎

انیس سو ساٹھ کی دہائی میں سیالکوٹ میں ایک نوجوان وکیل تھا‘ امریکا سے پڑھ کر آیا تھا‘ ذہنی اور جسمانی لحاظ سے مضبوط تھا‘ آواز میں گھن گرج بھی تھی اور حس مزاح بھی آسمان کو چھوتی تھی‘ یہ بہت جلد کچہری میں چھا گیا‘ وکیلوں کے ساتھ ساتھ جج بھی اس کے گرویدا ہو گئے‘ اس ....مزید پڑھئے‎