مریضوں کو لے جانے والی ایمبولینس گاڑیوں کو نہ روکا جائے ، آئی جی پنجاب انعام غنی نے احکامات جاری کر دیے

  ہفتہ‬‮ 19 ستمبر‬‮ 2020  |  0:22

لاہور(این این آئی) انسپکٹر جنرل پولیس پنجاب انعام غنی نے کہا ہے کہ شاہرات پر انسانی جانوں کے تحفظ کیلئے ایمبولینس گاڑیوں کی بلاتاخیر آمدورفت کو یقینی بنانا انتہائی ضروری ہے کیونکہ سڑک پر ٹریفک رش میں پھنسنے سے صرف کچھ منٹوں کی تاخیر قیمتی انسانی جان کے ضیاع کا سبب بن سکتی ہے لہذاشاہرات پر ایمبولینس گاڑیوں کی بلا تاخیر آمدورفت کیلئے سیکیورٹی اور ٹریفکپروٹوکولز پر عمل درآمد سے گریز کیا جائے تاکہ میڈیکل ایمرجنسی میں کسی شہری کو ہسپتال پہنچنے کیلئے غیر ضروری انتظارکا سامنا نہ کرنا پڑے۔ انہوںنے مزیدکہاکہ صوبے کے تمام اضلاع میں شاہرات پر ٹریفک


پولیس کی ٹیمیں ایمبولینس گاڑیوں کی با آسانی آمدورفت کیلئے ترجیحی بنیادوں پر اقدامات یقینی بنائیں اور آر پی اوز،سی پی اوز اور ڈی پی اوز اس حوالے سے اقدامات کی مانیٹرنگ بھی کرتے رہیں۔ انہوں نے مزیدکہاکہ مریضوں کو لے جانے والی ایمبولینس گاڑیوں کو پولیس ناکوں پرغیر ضروری طور پر نہ روکا جائے اور میڈیکل ایمر جنسی کی تصدیق ہوتے ہی ایمبولینس گاڑیوں کو فوراً جانے کی اجازت دے دی جائے ۔انہوں نے مزیدکہاکہ پولیس کی تمام گاڑیاں سڑک سے گذرنے والی ایمبولینس گاڑیوں کیلئے بلا تاخیر راستہ کلئیر کردیں اور مریضوں کو ہسپتال پہنچانے والے ایمبولینسوں کو راستہ دینے کیلئے ٹریفک سنگنلز کو فوراً گرین کردیا جائے ۔یہ ہدایات انہوں نے سی سی پی او لاہور سمیت صوبے کے تمام آر پی اوز، سی پی اوز اور ڈی پی اوز کے نام بھجوائے گئے مراسلے میں جاری کی ہیں ۔ تفصیلات کے مطابق مراسلے میں ریجنل اور ضلعی پولیس افسران کو ہدایت کی گئی ہے کہ پولیس ٹیمیںمیڈیکل ایمر جنسی کے مقام پر ایمبولینسوں کے پہنچنے کیلئے فوراً راستہ کلئیر کروائیں اور مریض کی زندگی کے تحفظ کیلئے راستہ بند ہونے کی صورت میں دو رویہ شاہرات پر ون وے کی خلاف ورزیکوبھی نظر انداز کیا جائے ۔انہوں نے مزیدکہا ہے کہ ٹریفک حادثہ کی صورت جائے وقوعہ کو آمدورفت کیلئے جلد از جلد کلئیر کروانا پولیس کی ذمہ داری ہے جبکہ ایمبولینسوں اور طبی عملے کو شاہرات پر فرائض کی ادائیگی کیلئے ہر ممکن تعاون کی فراہمی کیلئے ایساو پیز پر ہر صورت عمل درآمد کروایا جائے ۔ مراسلے میں تاکید کی گئی ہے کہ تمام آر پی اوز، سی پی اوز اور ڈی پی اوز مندرجہ بالا ہدایات پر عمل درآمد ہر صورت یقینی بنائیں اور خلاف ورزی کی صورت ذمہ دارا ن کے خلاف محکمانہ کاروائی کی جائے ۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

صرف تین ہزار روپے میں

دنیا میں جہاں بھی اردو پڑھی جاتی ہے وہاں لوگ مختار مسعود کو جانتے ہیں‘ مختار مسعود بیورو کریٹ تھے‘ ملک کے اعلیٰ ترین عہدوں پر رہے‘ لاہور کا مینار پاکستان ان کی نگرانی میں بنا‘ یہ اس وقت لاہور کے ڈپٹی کمشنر تھے‘ چارکتابیںلکھیںاور کمال کر دیا‘ یہ کتابیں صرف کتابیں نہیں ہیں‘ یہ تاریخ‘ جغرافیہ اور پاکستان کے ....مزید پڑھئے‎

دنیا میں جہاں بھی اردو پڑھی جاتی ہے وہاں لوگ مختار مسعود کو جانتے ہیں‘ مختار مسعود بیورو کریٹ تھے‘ ملک کے اعلیٰ ترین عہدوں پر رہے‘ لاہور کا مینار پاکستان ان کی نگرانی میں بنا‘ یہ اس وقت لاہور کے ڈپٹی کمشنر تھے‘ چارکتابیںلکھیںاور کمال کر دیا‘ یہ کتابیں صرف کتابیں نہیں ہیں‘ یہ تاریخ‘ جغرافیہ اور پاکستان کے ....مزید پڑھئے‎