چیف جسٹس گلزار احمد نے علامہ محمد اقبال روم اور پاکستان کارنر کا افتتاح کر دیا

  اتوار‬‮ 19 ستمبر‬‮ 2021  |  14:13

جکارتہ(این این آئی)چیف جسٹس آف پاکستان جسٹس گلزار احمد نے الازہر یونیورسٹی جکارتہ کی لائبریری میں علامہ محمد اقبال روم اور پاکستان کارنر کا افتتاح کردیا۔ چیف جسٹس انڈونیشیا کے چار روزہ دورے پر ہیں ، جسٹس اعجاز الاحسن بھی ان کے ہمراہ ہیں اوروہ آئینی و سپریم کورٹس/او آئی سی کے ممبر/مبصر ریاستوں کی دوسری جوڈیشل کانفرنس میں شرکت کریں گے۔افتتاحی تقریب جکارتہ کی الازہر یونیورسٹی میں منعقد ہوئی ، جو انڈونیشیا کی معزز یونیورسٹیوں میں سے ایک ہے اور اس میں الازہر یونیورسٹی کے ریکٹر ، فیکلٹی ممبران اور منتخب طلبا نے شرکت کی۔افتتاحی تقریب سے ریکٹر الازہر


یونیورسٹی آسیپ سیف الدین نے مہمانوں کا استقبال کرتے ہوئے حکومت پاکستان کا اس اقدام کے لیے شکریہ ادا کیا اور امید ظاہر کی کہ یہ دونوں ممالک کے نوجوانوں کو ایک دوسرے کے قریب لائے گا۔پاکستانی سفیر محمد حسن نے پاکستان اور انڈونیشیا کے درمیان برادرانہ تعلقات کی تاریخی نوعیت کی وضاحت کی۔ انہوں نے کہا کہ سفارت خانہ دو طرفہ تعلقات کو بڑھانے کے ساتھ خصوصی طور پر تعلیمی تعاون کے لیے مزید جدید طریقے تلاش کر رہا ہے ۔ جسٹس اعجازالاحسن نے اپنے خطاب میں دورے کے دوران گرم جوش مہمان نوازی پر انڈونیشیا کی حکومت کا شکریہ ادا کیا اور تعلیمی تعاون بڑھانے میں پاکستانی سفارت خانہ اور الازہر یونیورسٹی کی کوششوں کو سراہا۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ یونیورسٹی میں پاکستان کارنر اور علامہ محمد اقبال روم کے قیام سے انڈونیشیا کے طلبا کو موقع ملے گا کہ وہ پاکستان کی تاریخ اور بھرپور ادبی ورثہ اور علامہ محمد اقبال کے افکار اور فلسفے کو تلاش کریں۔افتتاحی تقریب کے اختتام پر چیف جسٹس مسٹر جسٹس گلزار احمد نے دیگر مہمانوں کے ہمراہ پاکستان کارنر اورر علامہ محمد اقبال روم کا دورہ کیا۔


زیرو پوائنٹ

نئی سیاسی کھچڑی

’’کرکٹ اگر مذہب ہوتا تو پورا برصغیر اس مذہب کا پیروکار ہوتا‘‘ یہ فقرہ کسی نے کہا تھا اور سچ کہا تھا‘ یہ واقعی حقیقت ہے سارک ممالک کرکٹ کے جنون میں مبتلا ہیں اور یہ خواہ کتنے ہی منقسم کیوں نہ ہوں یہ لوگ کرکٹ پر ایک ہو جاتے ہیں‘ پاکستان بھی اس جنون کی اعلیٰ ترین مثال ہے‘ ....مزید پڑھئے‎

’’کرکٹ اگر مذہب ہوتا تو پورا برصغیر اس مذہب کا پیروکار ہوتا‘‘ یہ فقرہ کسی نے کہا تھا اور سچ کہا تھا‘ یہ واقعی حقیقت ہے سارک ممالک کرکٹ کے جنون میں مبتلا ہیں اور یہ خواہ کتنے ہی منقسم کیوں نہ ہوں یہ لوگ کرکٹ پر ایک ہو جاتے ہیں‘ پاکستان بھی اس جنون کی اعلیٰ ترین مثال ہے‘ ....مزید پڑھئے‎