انٹرنیٹ کالز پر ٹیکس لینے کا معاملہ، سپریم کورٹ نے صارفین کو بڑی خوشخبری سنا دی

  ہفتہ‬‮ 8 فروری‬‮ 2020  |  14:57

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک ) حکومت کو انٹرنیٹ کمپنیوں سے فیڈرل ایکسائز ڈیوٹی وصول کرنے سے روک دیا گیا۔نجی ٹی وی کے مطابق سپریم کورٹ نے نجی کمپنیوں سے ٹیکس وصولی کے لیے دائر ایف بی آر کی اپیل خارج کر دی۔عدالت نے فیصلے میں کہا کہ واٹس ایپ،سکائپ اور دیگر سروسز کمیونیکیشن کے زمرے میں نہیں آتیں۔واٹس ایپ اور دیگر کمپنیاں صارفین سے کوئی وصول نہیں کرتی۔فیصلے میں کہا گیا کہ انٹرنیٹ صارفین کی مرضی ہے براؤزنگ کریں یا آڈیو کالز، انٹرنیٹ کالز پر ٹیلی کمیونیکیشن سروس کی مد میں ٹیکس نہیں لیا جا سکتا۔انٹرنیٹ کمپنیاں صرف سروس چارجز لیتی


ہیں،واٹس ایپ و دیگر کال کے چارجز نہیں۔انٹرنیٹ کمپنیاں اضافی وصول نہیں کرتیں تو ٹیکس کیسے لیا جا سکتا ہے۔یاد رہے نجی کمپنی نے ٹیکس نوٹس کو ٹربیونل میں چیلنج کیا تھا۔


موضوعات: