آؤ اور ہم پر حملہ کرو،بھارت کے نئے آرمی چیف کو حملے کا چیلنج ،بدلے میں ہمارا جواب کیا ہوگا؟ پاکستان نے خبر دار کردیا

  ہفتہ‬‮ 25 جنوری‬‮ 2020  |  6:56

اسلام آباد( آن لائن )صدر آزادکشمیر نے بھارتی آرمی چیف کو پاکستان پر حملے کے لئے چیلنج کر دیا۔سردار مسعور خان کا بات کرتے ہوئے کہنا تھا کہ میں چیلنج کرتا ہوں کہ بھارتی فوج آئے اور پاکستان پر حملہ کرے، تاریخ مت بھولیں ،پاکستانی فوج مقابلے کے لئے تیار ہے،بھرپور اور منہ توڑ جواب دیا جائے گا۔اس سے قبل 11 جنوری کو بھارتی آرمی چیف کی جانب سے دہلی میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے کہا گیا تھا کہ اگر پارلیمنٹ ہمیں اجازت دے گی تو ہم آزاد کشمیر پر حملہ کرنے کو تیار ہیں ،ہمارے پا س منصوبے تیار


ہیں۔اسی پر بیان دیتے ہوئے صدر آزاد کشمیر کا کہنا تھا کہ میں بھارتی آرمی چیف کو چیلنج کرتا ہوں کہ وہ حملہ کریں، ان کو بھرپور جواب دیا جائے گا۔مسئلہ کشمیر پر بات کرتے ہوئے سردار مسعود خان کا کہنا تھا کہ اگر امریکہ مسئلہ کشمیر حل کروانا چاہتا ہے اور ثالثی کا کردار ادا کرنا چاہتا ہے تو اسے پہلے مقبوضہ کشمیر میں ہونے والے ظلم کو روکنا ہو گا۔مقبوضہ کشمیر جہنم بنا ہوا ہے، نوجوانوں کو جیل میں ڈالا جا رہا ہے ،لوگوں کو بجلی کے جھٹکے لگائے جا رہے ہیں، بچے بچے کے ماتھے پر دشمن کا لیبل لگا دیا گیا ہے۔چین کی تعریف کرتے ہوئے صدر آزاد کشمیر کا کہنا تھا کہ چین کا شکریہ ادا چاہوں کا جس کی وجہ سے یہ مسئلہ اقوام متحدہ کے فلور تک پہنچا اور اس پر بات ہوئی۔لیکن ا قوام متحدہ کی جانب سے اس مسئلے کو حل کرنے کے لئے کوئی اقدامات نہیں کئے جا رہے جو کہ افسوس ناک ہے۔بھارتی آرمی چیف کے بیان پر بات کرتے ہوئے انہیں چیلنج کیا گیا ہے کہ بھارتی فوج آئے اور پاکستان پر حملہ کرے،لیکن تاریخ کو مت بھولے، پاکستانی فوج مقابلے کے لئے تیار ہے،بھرپور اور منہ توڑ جواب دیا جائے گا۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

قاسم پاشا کی گلیوں میں

آیا صوفیہ کے سامنے دھوپ پڑی تھی‘ آنکھیں چندھیا رہی تھیں‘ میں نے دھوپ سے بچنے کے لیے سر پر ٹوپی رکھ لی‘ آنکھیں ٹوپی کے چھجے کے نیچے آ گئیں اور اس کے ساتھ ہی ماحول بدل گیا‘ آسمان پر باسفورس کے سفید بگلے تیر رہے تھے‘ دائیں بائیں سیکڑوں سیاح تھے اور ان سیاحوں کے درمیان ....مزید پڑھئے‎

آیا صوفیہ کے سامنے دھوپ پڑی تھی‘ آنکھیں چندھیا رہی تھیں‘ میں نے دھوپ سے بچنے کے لیے سر پر ٹوپی رکھ لی‘ آنکھیں ٹوپی کے چھجے کے نیچے آ گئیں اور اس کے ساتھ ہی ماحول بدل گیا‘ آسمان پر باسفورس کے سفید بگلے تیر رہے تھے‘ دائیں بائیں سیکڑوں سیاح تھے اور ان سیاحوں کے درمیان ....مزید پڑھئے‎