مقبوضہ کشمیر میں ہندو پجاری کی آخری رسومات مسلمان ہمسایوں نے ادا کردیں

11  فروری‬‮  2015

مقبوضہ کشمیرمیں ایک پنڈت پجاری رتن لال رازدان سرینگر میں چل بسا تو مسلمان ہمسایوں نے پنڈتوں کے ساتھ مل کر اس کی آخری رسومات ادا کیں اور ان کے اہلخانہ کی ڈھارس بندھائی۔

کشمیر میڈیا سروس کے مطابق 1990میں جب پنڈتوں کو اس وقت کے گورنر جگموہن نے مقبوضہ کشمیر سے نکل جانے کیلئے کہا تو رتن لال رازدان نے مقبوضہ علاقے میں رہنے کو ترجیح دی اور 25 سال تک اپنی مذہبی رسومات ادا کرتے رہے۔ آنجہانی کی بڑی بیٹی میناکشی جو ایک بینکر ہیں، کا کہنا ہے کہ ہم علاقے میں واحد پنڈت خاندان تھے اور رات کو جب کسی کے چلنے کی آواز آتی تھی تو ہم ڈر کے مارے کانپ جاتے تھے لیکن مسلمان ہمسائے ہماری بہت عزت کرتے تھے اور انھوں نے ہمیں احساس تحفظ دیا۔



کالم



ہم بھی کیا لوگ ہیں؟


حافظ صاحب میرے بزرگ دوست ہیں‘ میں انہیں 1995ء سے…

مرحوم نذیر ناجی(آخری حصہ)

ہمارے سیاست دان کا سب سے بڑا المیہ ہے یہ اہلیت…

مرحوم نذیر ناجی

نذیر ناجی صاحب کے ساتھ میرا چار ملاقاتوں اور…

گوہر اعجاز اور محسن نقوی

میں یہاں گوہر اعجاز اور محسن نقوی کی کیس سٹڈیز…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے (آخری حصہ)

میاں نواز شریف کانگریس کی مثال لیں‘ یہ دنیا کی…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے

بودھ مت کے قدیم لٹریچر کے مطابق مہاتما بودھ نے…

جنرل باجوہ سے مولانا کی ملاقاتیں

میری پچھلے سال جنرل قمر جاوید باجوہ سے متعدد…

گنڈا پور جیسی توپ

ہم تھوڑی دیر کے لیے جنوری 2022ء میں واپس چلے جاتے…

اب ہار مان لیں

خواجہ سعد رفیق دو نسلوں سے سیاست دان ہیں‘ ان…

خودکش حملہ آور

وہ شہری یونیورسٹی تھی اور ایم اے ماس کمیونی کیشن…

برداشت

بات بہت معمولی تھی‘ میں نے انہیں پانچ بجے کا…