چوہدی شجاعت جیسا سیاستدان کوئی دوسرا نہیں ، عمران خان کا پرانا بیان وائرل ہوگیا

  ہفتہ‬‮ 23 جولائی‬‮ 2022  |  15:47

اسلام آباد(این این آئی) مسلم لیگ (ق) کے سربراہ چوہدری شجاعت حسین کی جانب سے ڈپٹی اسپیکر دوست مزاری کو لکھے گئے خط نے وزیر اعلیٰ پنجاب کے الیکشن کی پوری کایا ہی پلٹ دی۔چوہدری شجاعت کا خط سامنے آنے کے بعد پنجاب اسمبلی میں نمبر گیم تبدیل ہوگیا اور

ڈپٹی اسپیکر نے (ق) لیگ کے ارکان کے ووٹ مسترد کرتے ہوئے حمزہ شہباز کی کامیابی کا اعلان کردیا۔اس تمام صورتحال میں سوشل میڈیا پر عمران خان کا چوہدری شجاعت حسین کے لیے ماضی میں دیا گیا بیان وائرل ہوگیا۔عمران خان نے اپنے دور حکومت میں ایک تقریب سے خطاب کے دوران چوہدری شجاعت حسین کی سیاسی صلاحیتوں کو سراہتے ہوئے کہا تھا کہ ‘میں سمجھتا ہوں کہ چوہدری صاحب پاکستان کے وہ سیاستدان ہیں جن کے پاس جو اسکلز ہیں وہ شاید ہی پاکستان کے کسی اور سیاستدان کے پاس ہوں ہمارا اس آپ کے اور آپ کے خاندان کے اوپر پورا اعتماد ہے۔دوسری جانب سیکرٹری جنرل پیپلز پارٹی سید نیر بخاری نے پی ڈی ایم کے امیدوار حمزہ شہباز شریف کو دوبارہ وزیراعلی پنجاب منتخب ہونے پر مبارکباد دی ہے ۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہاکہ وفاق سے نکالے گئے عمران خان پر پنجاب اسمبلی اراکین نے بھی عدم اعتماد کر دیا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ آصف زرداری نے ملکی تاریخ میں اتحادی جماعت کا دوبارہ وزیراعلی منتخب کرانے کا پہلا اور منفرد اعزاز حاصل کیا ہے ۔ انہوں نے کہاکہ آصف علی زرداری پارلیمانی جمہوری نظام کے تسلسل پر راہبر جمہوریت کہلانے کے حق دار ہیں ۔ نیئر حسین بخاری نے کہاکہ چویدری شجاعت کے جمہوری کردار سے پنجاب میں غیر جمہوری سوچ کو شکست فاش ہوئی ہے ۔



موضوعات:

زیرو پوائنٹ

قیروان شہر میں چند گھنٹے

قیروان تیونس شہر سے دو گھنٹے کی ڈرائیو پر واقع ہے‘ شہر کی بنیاد حضرت عثمان غنیؓ کے دور میں عقبہ بن نافع نے رکھی اور یہ شمالی افریقہ میں مسلمانوں کا پہلا شہربن گیا‘ اس مقام کا انتخاب صحابی رسول حضرت ابوزمان البالوئی ؓ(Balaoui) نے کیا تھا‘ آپؓ 654ء میں یہاں تشریف لائے اور بربر قبائل کو دعوت اسلام ....مزید پڑھئے‎

قیروان تیونس شہر سے دو گھنٹے کی ڈرائیو پر واقع ہے‘ شہر کی بنیاد حضرت عثمان غنیؓ کے دور میں عقبہ بن نافع نے رکھی اور یہ شمالی افریقہ میں مسلمانوں کا پہلا شہربن گیا‘ اس مقام کا انتخاب صحابی رسول حضرت ابوزمان البالوئی ؓ(Balaoui) نے کیا تھا‘ آپؓ 654ء میں یہاں تشریف لائے اور بربر قبائل کو دعوت اسلام ....مزید پڑھئے‎