عمران خان کو سپورٹ کرنا وقت کی ضرورت کیونکہ یہ ملکی خودمختاری کا مسئلہ ہے سابق ڈی جی آئی ایس آئی جنرل ( ر) ظہیر الاسلام بھی عمران خان کے حق میں بول پڑے

  پیر‬‮ 27 جون‬‮ 2022  |  11:18

کہوٹہ ( مانیٹرنگ ڈیسک)سابق ڈی جی آئی ایس آئی جنرل ( ر) ظہیر الاسلام راجہ کی رہائش گاہ مٹور میں ضمنی الیکشن کے حوالے سے بڑا جلسہ ایم این اے صداقت علی عباسی ،نامز د امیدوار PTIکرنل (ر)محمد شبیر اعوان سمیت تنظیمی عہدیداروں اور علاقے بھر سے سینکڑوں کی تعداد میں سیاسی وسماجی شخصیات نے شر کت کی ۔جنرل ر  ظہیر الاسلام راجہ نے نامز د

امیدوار PTIکرنل (ر)محمد شبیر اعوان کی بھر پور حمائت کا اعلان کیا۔ تفصیل کے مطابق گذشتہ روزسابق ڈی جی آئی ایس آئی جنرل ( ر) ظہیر الاسلام  راجہ کی رہائش گاہ مٹور میں ضمنی الیکشن کے حوالے سے بڑا جلسہ منعقد کیا گیا جس میں ایم این اے صداقت علی عباسی ،نامز د امیدوار PTIکرنل (ر)محمد شبیر اعوان،سابق ایم این اے غلام مرتضٰی ستی، بریگیڈیئر (ر) شاز الحق جنجوعہ، سابق چیرمین آر ڈی اے راجہ طارق مرتضیٰ،تحریک انصاف تحصیل کہوٹہ سابق صدر راجہ خورشید ستی ،سابق صدر پی ٹی آئی کہوٹہ راجہ وحید احمد خان ، سابق جنرل سیکرٹری پی ٹی آئی تحصیل کہوٹہ،راجہ الطاف حسین،کرنل(ر) راجہ سعید جنجوعہ ،کرنل(ر) راجہ ارشد جنجوعہ ، میجر ر شہریار جنجوعہ،راجہ شاہد علی جنجوعہ تھوہا راجگان ،سابق ڈپٹی سیکرٹری ضلع پنڈی راجہ ارشد،سابق صدردکھالی چوھدری واحدآف پیکاں ، راجہ عاطف ایڈوکیٹ،راجہ عمران ستا ر جنجوعہ ،تحصیل صدر یوتھ ونگ ناصر نزیر ستی،سکندر ستی پنجاڑ ،عبدالسلام عباسی، سابق صدر یو سی لہڑی راجہ عمران، تظرف حسین ستی،صدر یو سی نارہ عبدالغفور مرزا، سابق صدر یو سی نڑھ افتخار ستی، عدیل افضل سمیت سینکڑوں کی تعداد میں سیاسی وسماجی شخصیات نے شر کت کی۔ اس موقع پر اپنے خطاب میں جنرل ظہیر الاسلام راجہ نے کہا کہ کرنل محمد شبیر کو جو ٹکٹ ملا ہے یہ ہم سب پر ذمہ داری ہے ہم کرنل شبیر اعوان کی بھر پور حمائت کریں تاکہ ہم یہ سیٹ جیت کر عمران خان کو سیٹ تحفہ میں دیں انہوں نے کہا کہ عمران خان کو سپورٹ کرنا وقت کی ضرورت ہے کیونکہ یہ ملکی خودمختاری کا مسلہ ہے اور آج مٹور کی غیور برادریوں نے فیصلہ کر دیا کہ کرنل شبیر اعوان کی جیت کو یقینی بنایا جائیگا۔



موضوعات:

زیرو پوائنٹ

سانو۔۔ کی

سانو ۔۔کی پنجابی زبان کا ایک محاورہ یا ایکسپریشن ہے‘ اس کا مطلب ہوتا ہے ہمیں کیا فرق پڑتا ہے‘ ہمارے باپ کا کیا جاتا ہے‘ ہمارا کیا نقصان ہے یاپھر آئی ڈونٹ کیئر‘ ہم پنجابی لوگ اوپر سے لے کر نیچے تک اوسطاً دن میں تیس چالیس مرتبہ یہ فقرہ ضرور دہراتے ہیں لہٰذا اس کثرت استعمال کی وجہ ....مزید پڑھئے‎

سانو ۔۔کی پنجابی زبان کا ایک محاورہ یا ایکسپریشن ہے‘ اس کا مطلب ہوتا ہے ہمیں کیا فرق پڑتا ہے‘ ہمارے باپ کا کیا جاتا ہے‘ ہمارا کیا نقصان ہے یاپھر آئی ڈونٹ کیئر‘ ہم پنجابی لوگ اوپر سے لے کر نیچے تک اوسطاً دن میں تیس چالیس مرتبہ یہ فقرہ ضرور دہراتے ہیں لہٰذا اس کثرت استعمال کی وجہ ....مزید پڑھئے‎