طاقتور برطانوی افراد پر مشتمل گروپ کی انتخابی مہم کے دوران عمران خان اور فوجی حکام سے مذاکرات کا انکشاف، امریکہ کس چیز کے بدلے ڈاکٹر عافیہ کو رہا کرنے کیلئے تیار ہے؟کپتان کی فتح کے بعد بڑی خبر آگئی

6  اگست‬‮  2018

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) امریکہ ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو ڈاکٹر شکیل آفریدی کی حوالگی کے بدلے رہا کر سکتا ہے، برطانوی اخبار دی گارڈین کی رپورٹ میں برطانوی پاکستانیوںکےایک بااثر گروپ کے ڈاکٹر عافیہ کے بدلے شکیل آفریدی کی حوالگی کے حوالے سے انتخابی مہم کے دوران عمران خان اور پاکستانی فوج کے اعلیٰ حکام کے ساتھ مذاکرات کا انکشاف ۔ تفصیلات کے مطابق

جعلی انسداد پولیو مہم چلاکر اسامہ بن لادن کو تلاش کرنے میں امریکی خفیہ ایجنسی سی آئی اے کی مدد کی تھی۔ اب ڈاکٹر شکیل آفریدی پاکستان کی جیل میں قید ہے اور امریکہ پاکستان سے بارہا مطالبہ کر چکا ہے کہ شکیل آفریدی کو اس کے حوالے کیا جائے۔تاہم اب برطانوی اخبار دی گارڈین نے اپنی رپورٹ میں انکشاف کیا ہے کہ انتخابی مہم کے دوران برطانوی پاکستانیوں کا ایک بااثر گروپ عمران خان اور پاکستانی فوج کے اعلیٰ حکام کے ساتھ مذاکرات کر رہا تھا کہ ڈاکٹر شکیل آفریدی کو امریکہ کے حوالے کرکے بدلے میں ڈاکٹر عافیہ صدیقی کو رہا کروایا جائے اور ملک واپس لایا جائے۔قومی اخبار کی رپورٹ کے مطابق برطانوی اخبار دی گارڈین کی رپورٹ میں بتایا گیا ہے کہ برطانوی ہاؤس آف لارڈ کے رکن نذیر احمد اس سلسلے میں جلد پاکستان کا دورہ بھی کرنے جا رہے ہیں جس میں وہ فوجی قیادت کے ساتھ اس حوالے سے گفتگو کریں گے۔لارڈ نذیر احمد کا کہنا تھا کہ ”امریکی ڈاکٹر آفریدی کی حوالگی کے لیے بہت بے چین ہیں۔ وہ اسے کسی بھی صورت امریکہ لانا چاہتے ہیں، دوسری طرف پاکستانی عوام اس سے بھی زیادہ شدت کے ساتھ ڈاکٹر عافیہ کی وطن واپسی چاہتے ہیں۔ان کے تبادلے کے سلسلے میں ہماری پاکستانی فوجی قیادت کے ساتھ ہونے والی گفتگو میں بہت مثبت پیشرفت ہوئی ہے اور شکیل آفریدی کے بدلے ڈاکٹر عافیہ کی رہائی میں دلچسپی لے رہے ہیں۔ پاکستانی سیاسی قیادت میں اس تبادلے پر متفق ہے۔ یہ تمام پیشرفت حال ہی میں ہوئی ہے اور میں بہت پراعتماد ہوں کہ شکیل آفریدی کے بدلے ڈاکٹر عافیہ کو رہائی مل سکتی ہے اور اسے وطن واپس لیجایا جا سکتا ہے۔“

موضوعات:



کالم



موت کی دہلیز پر


باباجی کے پاس ہر سوال کا جواب ہوتا تھا‘ ساہو…

ایران اور ایرانی معاشرہ(آخری حصہ)

ایرانی ٹیکنالوجی میں آگے ہیں‘ انہوں نے 2011ء میں…

ایران اور ایرانی معاشرہ

ایران میں پاکستان کا تاثر اچھا نہیں ‘ ہم اگر…

سعدی کے شیراز میں

حافظ شیرازی اس زمانے کے چاہت فتح علی خان تھے‘…

اصفہان میں ایک دن

اصفہان کاشان سے دو گھنٹے کی ڈرائیور پر واقع ہے‘…

کاشان کے گلابوں میں

کاشان قم سے ڈیڑھ گھنٹے کی ڈرائیو پر ہے‘ یہ سارا…

شاہ ایران کے محلات

ہم نے امام خمینی کے تین مرلے کے گھر کے بعد شاہ…

امام خمینی کے گھر میں

تہران کے مال آف ایران نے مجھے واقعی متاثر کیا…

تہران میں تین دن

تہران مشہد سے 900کلو میٹر کے فاصلے پر ہے لہٰذا…

مشہد میں دو دن (آخری حصہ)

ہم اس کے بعد حرم امام رضاؒ کی طرف نکل گئے‘ حضرت…

مشہد میں دو دن (دوم)

فردوسی کی شہرت جب محمود غزنوی تک پہنچی تو اس نے…