افغان مائیں اپنے بچے بیچنے پرمجبور،دنیا مدد کرے،معید یوسف

  بدھ‬‮ 24 ‬‮نومبر‬‮ 2021  |  16:50

اسلام آباد ( آن لائن )مشیر قومی سلامتی معید یوسف نے کہا ہے کہ پاکستان افغانستان تک امداد پہنچانے کے لیے زمینی اور فضائی پل بننے کے لیے تیار ہے۔ امریکی خبر رساں ادارے کو دیئے گئے ایک انٹرویو میں مشیر قومی سلامتی نے کہا کہ افغانستان میں خوراک اورادویات کی شدید قلت ہے۔ افغانستان میں ضروریات زندگی حاصل کرنے کیلیے مائیں بچوں کو بیچنے پر مجبور ہیں۔انہوں نے کہا ہے کہ افغانستان کو امداد کیلئے پاکستان نے فضائی اور زمینی پل بننے کی پیشکش کی ہے۔افغانستان کو خوراک اور ادویات کی فراہمی کے لیے پاکستانی سرزمین استعمال کی جاسکتی


ہے۔ وزیراعظم عمران خان نے افغانستان کے عوام کے لیے امدادی پیکج کا اعلان کیا ہے۔ دنیا کے تمام ممالک کو بھی 35 ملین افغان مرد، خواتین اور بچوں کا سوچنا چاہیے۔ان کا کہنا ہے کہ افغان عوام کی انسانی امداد سیاست سے بالاتر ہونی چاہیے۔ بین الاقوامی تنظیمیں افغانستان میں ہیلتھ ورکر زکی معاونت اور تنخواہیں فراہم کرنے کیلئے اقدامات کریں۔


زیرو پوائنٹ

برف باری

یہ پرانی مثال ہے‘ ایک چھوٹا ہوائی جہاز کسی برفانی پہاڑ پر گرگیا‘ پائلٹ مر گیا‘ جہاز میں صرف دو مسافر سوار تھے‘ وہ دونوں بچ گئے‘ اب صورت حال یہ تھی‘ ہر طرف برف ہی برف تھی اور اس برف کے درمیان دو لوگ جہاز کے ملبے میں گرے پڑے تھے‘ دور دور تک کوئی آبادی نہیں تھی‘ خوراک ....مزید پڑھئے‎

یہ پرانی مثال ہے‘ ایک چھوٹا ہوائی جہاز کسی برفانی پہاڑ پر گرگیا‘ پائلٹ مر گیا‘ جہاز میں صرف دو مسافر سوار تھے‘ وہ دونوں بچ گئے‘ اب صورت حال یہ تھی‘ ہر طرف برف ہی برف تھی اور اس برف کے درمیان دو لوگ جہاز کے ملبے میں گرے پڑے تھے‘ دور دور تک کوئی آبادی نہیں تھی‘ خوراک ....مزید پڑھئے‎