’’بریکنگ نیوز پاکستان کا اہم شہر خوفناک دھماکہ سے لرز اٹھا،11افراد جاں بحق ،100سے زائد زخمی، ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ،ہلاکتوں میں اضافے کا خدشہ

31  مارچ‬‮  2017

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)دہشتگرد ایک بار پھر وار گئے، پارا چنار شہر کے وسط میں امام بارگاہ کے دروازے پر دھماکہ11افراد جاں بحق،100سےزائد زخمی، علاقے کو سکیورٹی فورسز نے گھیرے میں لے لیا، امدادی کارروائیاں جاری ،زخمی ہسپتال منتقل، علاقے کے

تمام ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ۔ تفصیلات کے مطابق پارا چنار شہر کے وسط میں واقع امام بارگاہ کے دروازے پرخوفناک دھماکہ ہوا جس کے نتیجے میں11افراد جاں بحق،100سےزائد زخمی ہو گئے ہیں ۔زخمیوں کو طبی امداد کیلئے ہسپتال منتقل کر دیا گیا جبکہ دھماکے کے باعث اموات میں اضافے کا بھی خدشہ ظاہر کیا جا رہا ہے۔ دھماکے کے بعد سکیورٹی فورسز نے علاقے کو گھیرے میں لے لیا ہے۔ پولیٹیکل  انتظامیہ نے علاقے کے تمام ہسپتالوں میں ایمرجنسی نافذ کر دی ہےجبکہ شدید زخمیوں کو طبی امداد کیلئے پشاور کے ہسپتالوں میں منتقل کرنے کیلئے پاک فوج کے ہیلی کاپٹرز علاقے میں روانہ کر دئیے گئے ہیں۔علاقے سے مسلسل فائرنگ کی آوازیں آنے کی بھی اطلاعات موصول ہو رہی ہیں۔ دھماکہ اتنا زوردار تھا کہ اس کی آواز 5کلومیٹر دور تک سنی گئی جبکہ دھماکہ کی شدت کے باعث قریبی عمارتوں کو بھی شدید نقصان پہنچا ہےاور متعدد گاڑیاں بھی تباہ ہو گئی ہیں۔یاد رہے کہ اس سے قبل بھی پارا چنار میں دہشتگردی واقعات اور بم دھماکوں میں کافی جانی و مالی نقصان ہو چکا ہےجبکہ پارا چنار شہر کی سبزی منڈی میں ہونے والے بم دھماکے میں بہت زیادہ جانی نقصان ہوا تھا ۔

موضوعات:



کالم



ہم بھی کیا لوگ ہیں؟


حافظ صاحب میرے بزرگ دوست ہیں‘ میں انہیں 1995ء سے…

مرحوم نذیر ناجی(آخری حصہ)

ہمارے سیاست دان کا سب سے بڑا المیہ ہے یہ اہلیت…

مرحوم نذیر ناجی

نذیر ناجی صاحب کے ساتھ میرا چار ملاقاتوں اور…

گوہر اعجاز اور محسن نقوی

میں یہاں گوہر اعجاز اور محسن نقوی کی کیس سٹڈیز…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے (آخری حصہ)

میاں نواز شریف کانگریس کی مثال لیں‘ یہ دنیا کی…

نواز شریف کے لیے اب کیا آپشن ہے

بودھ مت کے قدیم لٹریچر کے مطابق مہاتما بودھ نے…

جنرل باجوہ سے مولانا کی ملاقاتیں

میری پچھلے سال جنرل قمر جاوید باجوہ سے متعدد…

گنڈا پور جیسی توپ

ہم تھوڑی دیر کے لیے جنوری 2022ء میں واپس چلے جاتے…

اب ہار مان لیں

خواجہ سعد رفیق دو نسلوں سے سیاست دان ہیں‘ ان…

خودکش حملہ آور

وہ شہری یونیورسٹی تھی اور ایم اے ماس کمیونی کیشن…

برداشت

بات بہت معمولی تھی‘ میں نے انہیں پانچ بجے کا…