کارگل جنگ کے موقع پر میں نے پونے 2 لاکھ پائونڈ کا معاہدہ چھوڑ دیا اورلاہور کی سرحد پر لڑنے پہنچ گیا، ایک جنرل نے پوچھا کہ تم یہاں کیا کر رہے ہو میں نے کہا ۔۔۔ شعیب اختر کے اہم انکشافات

  جمعرات‬‮ 6 اگست‬‮ 2020  |  10:44

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک) کارگل واقعے کے وقت میں نے کائونٹی کرکٹ میں پونے دو لاکھ پائونڈ کے معاہدے کو ٹھکرادیا تھا۔شعیب اختر کا انکشاف،نجی ٹی وی پروگرام میں سوالوں کا جواب دیتے ہوئے شعیب اختر نے کہا کہ کسی کو میری حب الوطنی پرشک نہیں ہونا چاہیے۔یہ بہت کم لوگ جانتے ہیں کہ کارگل وار کے دوران میرا پونے دو لاکھ پائونڈ اور 2002 میں اس سے بھی مہنگا معاہدہ ہوا ناٹنگھم شائر کے ساتھ،میں یہ دونوں معاہدے چھوڑ کے آگیا تھا کیونکہ کارگل کی وجہ سے ملک میں جنگ کا ماحول تھا۔ میں لاہور کے سرحدی علاقے پر کھڑا


تھا، پاک فوج کے ایک جنرل نے مجھ سے پوچھا کہ تم یہاں کیا کررہے ہو میں نے کہا جنگ ہونے والی ہے مریں گے تو ساتھ ہی مریں گے ایسی کی تیسی دیکھ لیں گے، میں دو بار کائونٹی چھوڑ کریہاں بھارت کے خلاف جنگ لڑنے پہنچ گیا تھا۔شعیب اختر نے مزید کہا کہ جب گزشتہ برس بھارت کے جہازوں نے پاکستانی حدود میں 5 درختوں کو نشانہ بنایا میں ساری رات پریشان رہا ،میری بیوی نے ہاتھ جوڑ جوڑ کر کہا کہ کچھ نہیں ہوا ہے آپ پرسکون ہوجائیں مگر میں کبھی کسی سے لڑوں کبھی کس طرف جاکر سر ماروں جب تک پاکستانی جانبازوں نے بھارت سے بدلہ نہیں لے لیا تب تک میں مجھے سکون نہیں ملا۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

بالا مستری

ہم اگر حضرت عمر فاروقؓ کی شخصیت کو دو لفظوں میں بیان کرنا چاہیں تو ”عدل فاروقی“ لکھ دینا کافی ہو گا‘ حضرت عمرؓ انصاف کے معاملے میں انقلابی تھے‘ یہ عدل کرتے وقت شریعت سے بھی گنجائش نکال لیتے تھے مثلاً حجاز اور شام میں قحط پڑا‘ لوگوں نے بھوک سے تنگ آ کر خوراک چوری کرنا ....مزید پڑھئے‎

ہم اگر حضرت عمر فاروقؓ کی شخصیت کو دو لفظوں میں بیان کرنا چاہیں تو ”عدل فاروقی“ لکھ دینا کافی ہو گا‘ حضرت عمرؓ انصاف کے معاملے میں انقلابی تھے‘ یہ عدل کرتے وقت شریعت سے بھی گنجائش نکال لیتے تھے مثلاً حجاز اور شام میں قحط پڑا‘ لوگوں نے بھوک سے تنگ آ کر خوراک چوری کرنا ....مزید پڑھئے‎