حکومت پنجاب کا ”ہیکرز “کو بھرتی کرنے کا فیصلہ

  جمعرات‬‮ 12 مارچ‬‮ 2015  |  19:11

لاہور(نیوز ڈیسک) حکومت پنجاب نے دہشت گردوں، اشتہاریوں، جرائم پیشہ عناصر اور انکے سہولت کاروں کا نیٹ ورک ختم کرنے کیلئے ہیکرز کی خدمات لینے کا فیصلہ کر لیا، موبائل فون، لینڈ لائنز، ای میلز اورویب سائٹس ہیکنگ کیلئے سیکرٹ فنڈز سے 6کروڑ روپے جاری کرنے کی منظوری دیدی گئی، پولیس میں آئی ٹی ماہرین اور ہیکرز کو خصوصی طور پر بھرتی کیا جائیگا جبکہ ہیکرز الرٹ کے نام سے نیا ڈیپارٹمنٹ بھی قائم ہوگا۔ معلوم ہوا کہ محکمہ خزانہ نے اس پراجیکٹ کیلئے ابتدائی طور پر 3 کروڑ روپے دینے کی تجویز دی تاہم محکمہ داخلہ نے پولیس افسروں


سے بریفنگ کے بعد 6 کروڑ روپے کی سمری اعلیٰ حکام کو بھجوائی جو فوری منظور کر لی گئی، محکمہ خزانہ نے سیکرٹ فنڈز سے ادائیگی پر بھی اعتراض کیا لیکن وزیراعلیٰ نے اسے مستردکردیا۔ ذرائع نے بتایا کہ فنڈز سے موبائل فونز، لینڈ لائنز، ای میلز ، غیرقانونی و اشتعال انگیز ویب سائٹس، بلاگس وغیرہ کوہیک کرنے کیلئے خصوصی طورپرسافٹ ویئرز اور جدید آلات خریدے جائینگے، اس سلسلہ میں پنجاب انفارمیشن ٹیکنالوجی بورڈ سے بھی مددلی جائیگی جبکہ نئے ڈیپارٹمنٹ کا سربراہ سینئرپولیس افسر ہو گا اور انٹیلی جنس ایجنسیوں کیساتھ معلومات کا تبادلہ بھی کیا جائیگا، دہشت گردوں اور دیگر جرائم پیشہ و مشکوک عناصرکی فون کالزہیک کرنے کے بعد انکی کالز سنی جا سکیں گی اور پھر فوری آپریشن کرتے ہوئے انہیں گرفتارکر لیا جائیگا، محکمہ داخلہ کے سینئر افسر نے منصوبہ کی تصدیق کرتے ہوئے کہا کہ ہیکنگ سے دہشت گردوں کا نیٹ ورک توڑنے ، انکی نقل وحرکت پر نظر رکھنے اورفوری گرفتاری میں بہت مدد ملے گی جبکہ پراجیکٹ پرکام کیا جا رہاہے۔