اس بندے کا کیا قصور ہے کہ اس نے اتنی بڑی سزا کاٹ لی،سپریم کورٹ نے سزائے موت کے ملزم کو 18 سال بعد بری کر دیا

  جمعہ‬‮ 30 اکتوبر‬‮ 2020  |  23:04

اسلام آباد (این این آئی) سپریم کورٹ نے سزائے موت کے ملزم سجاد حسین کو شک کا فائدہ دیتے ہوئے اٹھارہ سال بعد بری کر دیا۔ گزشتہ روز جسٹس منظور ملک کی سربراہی میں تین رکنی بینچ نے کیس کی سماعت کی،ٹرائل کورٹ اور ہائی نےملزم سجاد حسین کو سزائے موت سنائی تھی۔ دور ان سماعت عدالت نے شک کا فائدہ دیتے ہوئے ملزم کو بری کر دیا،ملزم سجاد حسین پر کلاشن کوف سے فائر کر کے ایک شخص کو قتل کرنے کا الزام تھا۔ وکیل ملزم نے کہاکہ ملزم سے کلاشنکوف بھی برآمد نہیں ہوئی۔جسٹس منظور ملک نے کہاکہ


یہ واقعہ کتنے گھنٹے کے بعد رپورٹ ہوا۔وکیل ملزم نے کہاکہ چھپن گھنٹے کے بعد یہ واقع رپورٹ ہوا۔ جسٹس منظور ملک نے کہاکہ حیرت کی بات ہے مدعی تھانے گیا پھر بھی بروقت رپورٹ درج نہیں ہوئی۔وکیل ملزم نے کہاکہ اس کیس میں وجہ عناد بھی ثابت نہیں ہوسکی۔جسٹس منظور ملک نے کہاکہ اس بندے کا کیا قصور ہے کہ اس نے اتنی بڑی سزا کاٹ لی۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

بڑے چودھری صاحب

انیس سو ساٹھ کی دہائی میں سیالکوٹ میں ایک نوجوان وکیل تھا‘ امریکا سے پڑھ کر آیا تھا‘ ذہنی اور جسمانی لحاظ سے مضبوط تھا‘ آواز میں گھن گرج بھی تھی اور حس مزاح بھی آسمان کو چھوتی تھی‘ یہ بہت جلد کچہری میں چھا گیا‘ وکیلوں کے ساتھ ساتھ جج بھی اس کے گرویدا ہو گئے‘ اس ....مزید پڑھئے‎

انیس سو ساٹھ کی دہائی میں سیالکوٹ میں ایک نوجوان وکیل تھا‘ امریکا سے پڑھ کر آیا تھا‘ ذہنی اور جسمانی لحاظ سے مضبوط تھا‘ آواز میں گھن گرج بھی تھی اور حس مزاح بھی آسمان کو چھوتی تھی‘ یہ بہت جلد کچہری میں چھا گیا‘ وکیلوں کے ساتھ ساتھ جج بھی اس کے گرویدا ہو گئے‘ اس ....مزید پڑھئے‎