جزائر بلوچستان کے ماہی گیروں کے ہیں جن پر قبضے کیے جارہے ہیں،سی پیک کے نام پر ہمیں بے گھر کر دیاجائے گا ، اختر مینگل کا حیرت انگیز دعویٰ

  جمعہ‬‮ 30 اکتوبر‬‮ 2020  |  22:50

اسلام آباد (آن لائن)بلوچستان نیشنل پارٹی مینگل کے سربراہ اختر مینگل نے گزشتہ روز قومی اسمبلی میں اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ پہلے دن سے ہی اینٹ غلط رکھی گئی ہے۔ میں پی ڈی ایم کا حصہ ہوں ۔پتہ نہیں تھا کہ پی ڈی ایم اتنا چھا جائےگا آج ایوان کا ماحول اور حکومت کا رویہ دیکھ کر لگ رہا ہے کہ پی ڈی ایم چھا گئی ہے۔ محمود خان اچکزئی زئی نے کوئی ایسی بات نہیں کی جس پر عتراضات کیے جائیں انہوں نے کہا کہ جلسے میں بلوچستان کی آزادی کے نعرے لگائے گئے ہیں اور وہ


شاہ احمد نورانی کے بیٹے پر الزام لگایا گیا ہے جس نے آرٹیکل 6کی خلاف ورزی کی ہے خواہ وہ جج یا جرنل ہو، ایسی قرار داد لائیں میں سپورٹ کرنے کو تیار ہوں۔ ملک میں مارشل لاء نافذ ہے، کوئی مانے نہ مانے ،برامدغ بگٹی پر الزامات لگائے گئے وہ گورنر رہے ہیں،ملک کا وزیراعظم اس وقت یہ بلوچستان کی آزادی کی بات کر سکتا ہے تو اس کو بھی وہی سزا ملنی چاہیے جو اویس نورانی کو ملنی چاہیے ۔جزائر بلوچستان کے ماہی گیروں کے ہیں جن پر قبضے کیے جارہے ہیں۔ عوام کی زرعی زمین پر ڈی ایچ اے بنایا جا رہا ہے سی پیک کے نام پر ہمیں بے گھر کر دیاجائے گا ہم سمجھتے تھے کہ سی پیک سے بہتری آئے گی۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

بڑے چودھری صاحب

انیس سو ساٹھ کی دہائی میں سیالکوٹ میں ایک نوجوان وکیل تھا‘ امریکا سے پڑھ کر آیا تھا‘ ذہنی اور جسمانی لحاظ سے مضبوط تھا‘ آواز میں گھن گرج بھی تھی اور حس مزاح بھی آسمان کو چھوتی تھی‘ یہ بہت جلد کچہری میں چھا گیا‘ وکیلوں کے ساتھ ساتھ جج بھی اس کے گرویدا ہو گئے‘ اس ....مزید پڑھئے‎

انیس سو ساٹھ کی دہائی میں سیالکوٹ میں ایک نوجوان وکیل تھا‘ امریکا سے پڑھ کر آیا تھا‘ ذہنی اور جسمانی لحاظ سے مضبوط تھا‘ آواز میں گھن گرج بھی تھی اور حس مزاح بھی آسمان کو چھوتی تھی‘ یہ بہت جلد کچہری میں چھا گیا‘ وکیلوں کے ساتھ ساتھ جج بھی اس کے گرویدا ہو گئے‘ اس ....مزید پڑھئے‎