اب دمام مست قلندر ہوگا، يہ جلد کيفر کردار کو پہنچیں گے حکومت نے اشرافیہ کیخلاف بڑا اعلان کر دیا ‎

  اتوار‬‮ 20 ستمبر‬‮ 2020  |  22:03

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک /این این آئی )شہباز گل کا کہنا ہے کہ جتنی چاہيں اے پی سی بلواليں احتساب تو ہوگا۔ اب دمام مست قلندر ہوگا، يہ جلد کيفر کردار کو پہنچیں گے۔لاہور میں پریس کانفرنس سے خطاب میں وزيراعظم کے معاون خصوصی شہباز گل کا کہنا تھا کہ آل پاکستان لوٹ مار ايسوسی ايشن پھر اکٹھی ہوگئی ہے۔ دونوں خاندان پہلے اندر سے ملے ہوئے تھے۔ آج اندر باہر دونوں سے مل گئے ہيںمگر عمران خان کا فيصلہ ہے کہ اين آر او نہيں ملے گا، جتنی چاہيں اے پی سی بلواليں احتساب تو ہوگا۔انہوں نے کہا کہ


جب سب چور متحد ہوجائيں تو سمجھ ليں کہ ايماندار تھانيدار آگيا ہے۔ جتنی چاہيں اے پی سی بلواليں احتساب تو ہوگا۔شہباز گل کا مزید کہنا تھا کہ عمران خان کی جگہ کوئی اور ہوتا تو دباؤ ميں آکر گھٹنے ٹيک ديتا۔ ابھی بہت سفر باقی ہے۔ اس اشرافيہ کو کيفرکردار تک پہنچانا ہے۔ اب دمام مست قلندر ہوگا، يہ جلد کيفر کردار ميں ہوںگے۔قبل ازیں معاون خصوصی شہباز گل نے کہا ہے کہ اے پی سی کا مطلب آل پاکستان لوٹ مار کمیٹی، لوٹی رقم کو بچانے کیلئے کرپٹ اشرافیہ کا گٹھ جوڑ ہے۔ لاہور میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے معاون خصوصی شہباز گل کا کہنا تھا کہ سارے چور اکٹھے ہو جائیں تو سمجھ لیں ایماندار تھانیدار آگیا، منی لانڈرنگ کیلئے قانون سازی سے انہیں اتنا مسئلہ کیوں ہے۔ جتنی مرضی اے پی سی کر لیں، این آر او نہیں ملنا۔ شریف خاندان سے زیادہ کوئی جھوٹ نہیں بول سکتا۔ انہوں نے کہا کہ کورونا کے دوران اشرافیہ چاہتی تھی مکمل لاک ڈان ہو، وزیراعظم نے مکمل لاک ڈان نہیں کیا اورغریب کا سوچا۔ عمران خان نے شب و روز ایک کر کے پاکستان کو دیوالیہ ہونے سے بچایا۔ وزیراعلی سندھ نے ڈھٹائی سے کہا کوئی بھوک سیمرتا نہیں دیکھا، اس بچے کی ویڈیو دیکھ لیں جس کا مرغا گندا پانی پینے سے مر گیا۔ شہباز گل نے مزید کہا کہ پوری دنیا میں احساس پروگرام جیسا منصوبہ نہیں آیا، تحریک انصاف کی حکومت نے احساس پروگرام میں بلاتفریق عوام کی مالی معاونت کی۔دوسری جانب معاون خصوصی شہباز گل نے کہا ہے کہ ایک بار پھر آل پاکستان لوٹ مار ایسوسی ایشن اکٹھی ہو رہی ہے۔میڈیا سے گفتگو معاون خصوصی شہبازگل نے کہا کہ اپوزیشن کی منی لانڈرنگ کی پیاس بجھ نہیں رہی، یہ وہی لوگ ہیں جو اپنے ساتھ اپنے کھانے اور برتن ساتھ لے کر جاتے تھے، ان کے پتیلے بھی ہیلی کاپٹر کے ذریعے مری جاتے تھے، وزیراعظم عمران خان نے کہا تھا کہجب سارے چور اکٹھے ہو جائیں تو سمجھ جائیں شہر میں ایماندار تھانیدار آ گیا ہے، دو سالوں میں پانچویں اے پی سی ہو رہی ہے، انہیں کیوں عمران خان سے اتنا خوف ہے۔معاون خصوصی نے کہا کہ جھوٹ میں شریف خاندان کا کوئی مقابلہ نہیں کرسکتا، دبئی ٹاور سے لیکر لندن فلیٹس سب ان کے ہیں، جھوٹے خط دینے پر قطری شہزادے نے بھی پناہ مانگی، ڈاکا زنی پر کسی کو انعام ملا تو آصف زرداریبلامقابلہ منتخب ہوں گے، حساب مانگیں تو کہتے ہیں سیاسی انتقام لیا جا رہا ہے۔شہبازگل نے کہا کہ آصف زرداری نے کہا (ن) لیگ کو جب بھی حکومت ملی پاکستان کو کنگال کردیا، آج آل شریف بلاول زرداری کے پاس حاضر ہے، آج شہبازشریف علی بابا چالیس چور کے گھر جا رہے ہیں، رینٹ اے کراؤڈ والے مولانا بھی ان سے ملنے جا رہے ہیں، اپوزیشن والے مل کر این آر او مانگ رہے ہیں، آج ایک بار پھر آل پاکستان لوٹ مار ایسوسی ایشن اکٹھی ہو رہی ہے، آج اے پی سی نہیں کرپٹ اشرافیہ کا گٹھ جوڑ ہونے جا رہا ہے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

مولانا روم کے تین دروازے

ہم تیسرے دروازے سے اندر داخل ہوئے‘ درویش اس کو باب گستاخاں کہتے تھے‘ مولانا کے کمپاﺅنڈ سے نکلنے کے تین اور داخلے کا ایک دروازہ تھا‘ باب عام داخلے کا دروازہ تھا‘ کوئی بھی شخص اس دروازے سے مولانا تک پہنچ سکتا تھا‘شاہ شمس تبریز بھی اسی باب عام سے اندر آئے تھے‘ مولانا صحن میں تالاب ....مزید پڑھئے‎

ہم تیسرے دروازے سے اندر داخل ہوئے‘ درویش اس کو باب گستاخاں کہتے تھے‘ مولانا کے کمپاﺅنڈ سے نکلنے کے تین اور داخلے کا ایک دروازہ تھا‘ باب عام داخلے کا دروازہ تھا‘ کوئی بھی شخص اس دروازے سے مولانا تک پہنچ سکتا تھا‘شاہ شمس تبریز بھی اسی باب عام سے اندر آئے تھے‘ مولانا صحن میں تالاب ....مزید پڑھئے‎