عام تعطیل کا اعلان، سرکاری ملازمین کیلئے خوشخبری، ایک نہیں اکٹھی تین چھٹیاں

  بدھ‬‮ 12 اگست‬‮ 2020  |  18:04

کراچی(نیوز ڈیسک) یوم آزادی پاکستان 14 اگست بروز جمعہ کو آ رہا ہے جس پر عام تعطیل دی جاتی ہے، وفاقی حکومت کے زیر کنٹرول سرکاری اداروں میں ہفتہ اور اتوار کو بھی عام تعطیل ہوتی ہے، اس طرح وفاقی اداروں کے سرکاری ملازمین ایک چھٹی نہیں بلکہ تین چھٹیوں سے مستفید ہوں گے۔ واضح رہے کہ حکومت سندھ نے یوم آزادی14 اگست بروز جمعہ کو عام تعطیل کا اعلان کردیاہے۔سندھ سروسز ڈپارٹمنٹ کیجانب سے جاری نوٹیفکیشن کے مطابق یوم آزادی کے موقع پر تمام سرکاری اداروں میں عام تعطیل ہوگی۔حکومت سندھ نے کورونا وائرس کا پھیلاؤ کم کرنے کیلئے


یوم آزادی کے موقع پر احتیاطی تدابیر اپنانے کی ہدایت بھی کی ہے۔پاکستان میں 14 اگست کے حوالے تیاریاں بھی عروج پر ہیں اور عوام میں کافی جوش وخروش پایا جا رہا ہے۔ بازاروں میں سبز جھنڈیوں کی بہار ہے اور لوگ اپنے گھروں کو بھی سجا رہے ہیں۔ملک بھرمیں 14 اگست بروز جمعے کو پاکستان کا73واں یوم آزادی منایا جائے گا۔ دن کا آغاز ملک اور قوم کی سلامتی، ترقی اور خوشحالی کے لئے خصوصی دعاں کے ساتھ ہوگا۔مزار قائد اور مزار اقبال پر گارڈز کی تبدیلی کی پر وقار تقریبات ہوں گی۔ صدر اور وزیر اعظم قوم کے نام خصوصی پیغامات جاری کئے جائیں گے۔یوم آزادی مناتے ہوئے بھارتی مقبوضہ کشمیر کے نہتے کشمیری بہن بھائیوں کے ساتھ یکجہتی کا بھی اظہار کیا جائے گا۔دوسری جانب ا سٹیٹ بینک آف پاکستان نے 14 اگست کو عام تعطیل کا اعلان کر دیا ہے اور اس سلسلے میں باقاعدہ نوٹیفکیشن جاری کر دیا ہے جس کے مطابق 14 اگست کو پاکستان کے 73 ویں جشن آزادی کے موقع پر لاہور سمیت ملک بھر میں بینک اور مالیاتی ادارے بند رہیں گے۔ یوم آزادی پاکستان 14 اگست بروز جمعہ کو آ رہا ہے جس پر عام تعطیل دی جاتی ہے، وفاقی حکومت کے زیر کنٹرول سرکاری اداروں میں ہفتہ اور اتوار کو بھی عام تعطیل ہوتی ہے، اس طرح وفاقی اداروں کے سرکاری ملازمین ایک چھٹی نہیں بلکہ تین چھٹیوں سے مستفید ہوں گے۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

قاسم پاشا کی گلیوں میں

آیا صوفیہ کے سامنے دھوپ پڑی تھی‘ آنکھیں چندھیا رہی تھیں‘ میں نے دھوپ سے بچنے کے لیے سر پر ٹوپی رکھ لی‘ آنکھیں ٹوپی کے چھجے کے نیچے آ گئیں اور اس کے ساتھ ہی ماحول بدل گیا‘ آسمان پر باسفورس کے سفید بگلے تیر رہے تھے‘ دائیں بائیں سیکڑوں سیاح تھے اور ان سیاحوں کے درمیان ....مزید پڑھئے‎

آیا صوفیہ کے سامنے دھوپ پڑی تھی‘ آنکھیں چندھیا رہی تھیں‘ میں نے دھوپ سے بچنے کے لیے سر پر ٹوپی رکھ لی‘ آنکھیں ٹوپی کے چھجے کے نیچے آ گئیں اور اس کے ساتھ ہی ماحول بدل گیا‘ آسمان پر باسفورس کے سفید بگلے تیر رہے تھے‘ دائیں بائیں سیکڑوں سیاح تھے اور ان سیاحوں کے درمیان ....مزید پڑھئے‎