وفاق کی سندھ کو دھمکیاں پاکستان پر حملہ ہے، کشمیر مسئلہ چند منٹ کی  خاموشی  سے اجاگر نہیں ہو گابلکہ کیا کرنا ہو گا ؟ مولا بخش چانڈیو حکومت پر برس پڑے

  منگل‬‮ 4 اگست‬‮ 2020  |  23:07

اسلام آباد ( آن لائن)پیپلز پارٹی کی سیکرٹری اطلاعات سینیٹر مولابخش چانڈیو  نے کہا ہے کہ نااہل وفاقی حکومت کی سندھ حکومت کو دھمکیاں وفاق پاکستان پر حملہ ہیں،اپنے ایک بیان میں ان کا کہنا تھا کہ عمران خان حکومت صرف نااہل ہی نہیں مافیاز کی سہولتکار بھی ہے ، خان صاحب اور ان کے انمول رتن نے پنجاب جیسے خوشحال صوبے کو کنگال کر دیا ہے ،پنجاب میں آٹے کا بحران پیدا کر کے ذمہ دار حکومت سندھ کو قرار دیا جا رہا ہے، اگر سندھ حکومت ہی پنجاب کے ہر بحران کی ذمہ دار ہے تو صوبہ ٹھیکے


پر مراد علی شاہ کو دیا جائے ،سندھ کو گورنر راج کی دھمکیاں سندھ پر نہیں آئین اور وفاق پر وار ہے ،یہ نالائق ناعاقبت اندیش حکمران ان دھمکیوں کا نتیجہ نہیں جانتے ،صوبوں کے خلاف اسلام آباد سے چلائی جانے والی یہ مہم معمولی بات نہیں ہے ، اگر سندھ یا کسی صوبے نے وفاقی حکومت کے اقدامات کا جواب دیا تو سوچیں بات کہاں جائے گی؟ عمران خان اور ان کے وزرا ہوش کا ناخن لیں ، ملک کے ساتھ مت کھیلیں ، کشمیر سے دستبردار ہونے والی حکومت اپنے صوبوں کو آنکھیں دکھا رہی ہے، عمران خان کا محبوب بھارتی وزیراعظم کشمیر ہڑپ کر گیا اور یہ بھاشن دیتے رہے، مقبوضہ کشمیر کی خصوصی حثیت کا خاتمہ نہ کشمیریوں کو قبول ہے نہ ہم کریں گے، عمران حکومت بیشک خاموش رہے مگر قوم خاموش نہیں رہے گی ،ہم بھٹو ، بینظیر بھٹو شہید اور بلاول بھٹو زرداری کی جماعت ہیں ۔پیپلز پارٹی کشمیر پر کوئی سمجھوتا قبول نہیں کرے گی ، کشمیر مسئلہ چند منٹ کی  خاموشی یا سلیکٹڈ کے بے سرو پا بھاشنوں سے اجاگر نہیں ہوگا ،مسئلہ کشمیر اجاگر کرنے کیلئے مدبرانہ سفارتکاری اختیار کرنا ہوگی۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

بالا مستری

ہم اگر حضرت عمر فاروقؓ کی شخصیت کو دو لفظوں میں بیان کرنا چاہیں تو ”عدل فاروقی“ لکھ دینا کافی ہو گا‘ حضرت عمرؓ انصاف کے معاملے میں انقلابی تھے‘ یہ عدل کرتے وقت شریعت سے بھی گنجائش نکال لیتے تھے مثلاً حجاز اور شام میں قحط پڑا‘ لوگوں نے بھوک سے تنگ آ کر خوراک چوری کرنا ....مزید پڑھئے‎

ہم اگر حضرت عمر فاروقؓ کی شخصیت کو دو لفظوں میں بیان کرنا چاہیں تو ”عدل فاروقی“ لکھ دینا کافی ہو گا‘ حضرت عمرؓ انصاف کے معاملے میں انقلابی تھے‘ یہ عدل کرتے وقت شریعت سے بھی گنجائش نکال لیتے تھے مثلاً حجاز اور شام میں قحط پڑا‘ لوگوں نے بھوک سے تنگ آ کر خوراک چوری کرنا ....مزید پڑھئے‎