پنجاب میں بڑے پیمانے پر اکھاڑ پچھاڑ،کارکردگی نہ دکھانے والے وزراء اور کلیدی عہدوں پر تعینات بیوروکریٹس کو تبدیل کرنے کا فیصلہ

  جمعرات‬‮ 28 مئی‬‮‬‮ 2020  |  20:52

لاہور(آن لائن) بزدار حکومت نے صوبے میں بہتر کارکردگی نہ رکھنے والے وزراء اور کلیدی عہدوں پر تعینات بیوروکریٹس کو تبدیل کرنے کا فیصلہ کرلیا، چار کو فارغ اور چھ کے قلمدان تبدیل کر دئیے جانے کا امکان ہے۔پنجاب حکومت کی جانب سے صوبائی وزراء کی بیس ماہ کی کارکردگی پر مبنی رپورٹ وزیراعلی پنجاب کو پیش کی گئی، زرائع کا کہنا ہے وزراء کی تین مرحلوں میں تقسیم شدہ کارکردگی رپورٹ میں دس صوبائی وزراء کو سی کیٹگری میں رکھا گیا ہے۔رپورٹ میں سی کیٹگری میں آنے والے ان وزراء میں سے ایک خاتون سمیت چار کو ناقص کارکردگی پر


وزارت سے الگ جبکہ چھ کے محکمے تبدیل کرنے کی سفارش کی گئی ہے۔ذرائع کے مطابق اس بار تبدیلی کی اس لہر میں وزراء کے ساتھ ساتھ بیوروکریٹس بھی آئیں گے، پنجاب میں 7 سیکرٹریز، 3 کمشنرز، 11 ڈپٹی کمشنرز، 7 ڈی پی اوز، 2 آر پی اوز کی تبدیلی کا بھی امکان ہے۔وزیراعظم عمران خان نے بھی وزیر اعلیٰ کو وزارتوں اور بیوروکریسی میں تبدیلیوں کی مکمل اجازت دے دی ہے، ممکنہ طور پر تبدیل ہونے والے ڈپٹی کمشنرز میں شیخوپورہ، اوکاڑہ، سیالکوٹ، گجرات، نارووال، اور حافظ آباد، جہلم، اٹک، خوشاب، ٹوبہ ٹیک سنگھ بھی شامل ہیں۔ذرائع کا کہنا ہے کمشنرز میں گوجرانوالہ ڈویڑن سمیت تین کمشنرز کو بھی تبدیل کیا جائے گا جبکہ پولیس افسران میں ڈی پی او ساہیوال، ڈی پی او پاکپتن، ڈی پی او سیالکوٹ، ڈی پی او سرگودھا، ڈی پی او خانیوال کو ممکنہ طور پر تبدیل کیا جاسکتا ہے۔


موضوعات: