کئی تاجر رہنما غائب ہیں جن کے بارے میں معلوم نہیں وہ کہاں ہیں؟ حکومت کیا کرنا چاہتی ہے؟ لیگی رہنما عظمیٰ بخاری کا دعویً

  جمعہ‬‮ 12 جولائی‬‮ 2019  |  23:36

لاہور(این این آئی) پاکستان مسلم لیگ (ن) پنجاب کی سیکرٹری اطلاعات عظمیٰ بخاری نے کہا ہے کہ حکومت تاجر برادری میں دھڑے بندی بناکر ہڑتال کو ناکام کرنا چاہتی ہے،ابھی تک کئی تاجر رہنما غائب ہیں جن کے بارے میں معلوم نہیں وہ کہاں ہیں۔ اپنے بیان میں انہوں نے کہا کہ فاشسٹ حکومت ہر طبقہ فکر کے لوگوں کی زبانیں بند کرنا چاہتی ہے،ہارس ٹریڈنگ کے ماسٹر مائنڈز نے تاجروں میں گروپ بندی بنادی ہے۔ انہوں نے کہا کہ ماضی قریب میں حکومتی ٹولہ انہی تاجروں کے مسائل کے نام پر سیاست کررہا ہے،آٹے پر 17فیصد سیلز ٹیکس غریب


کے منہ سے نوالہ چھینے کے مترادف ہے۔اکستان کی 70سالہ تاریخ میں پہلی بار روٹی 12اور نان 20روپے کا ہوگیا ہے۔آج وہ لوگ کہاں گئے جو کہتے تھے روٹی کی قیمت میں اضافہ ہواتو سیاست چھوڑ دوں گا۔عظمیٰ بخاری نے کہا کہ بھکاری حکومت دنیا بھر سے بھیک مانگنے کے باوجود صنعتکاروں اور تاجروں کا خون نچوڑ رہی ہے،نالائق حکومت نے نائی،حلوائی،بیوٹی پارلر،پرچون سمیت ہر طبقے کے تاجروں پر ٹیکس لگادئیے ہیں،اپوزیشن کی تمام ہمدردیاں تاجر برداری کے ساتھ ہیں۔


زیرو پوائنٹ

استنبول یا دہلی ماڈل

میاں نواز شریف کے پاس دو آپشن ہیں‘ استنبول یا دہلی‘ ہم ان آپشنز کو ترکی یا انڈین ماڈل بھی کہہ سکتے ہیں۔ہم پہلے ترکی ماڈل کی طرف آتے ہیں‘ رجب طیب اردگان 1954ء میں استنبول میں قاسم پاشا کے علاقے میں پیدا ہوئے‘ غریب گھرانے سے تعلق رکھتے تھے‘ سکول سے واپسی پر گلیوں میں شربت بیچتے تھے‘بڑی مشکل ....مزید پڑھئے‎

میاں نواز شریف کے پاس دو آپشن ہیں‘ استنبول یا دہلی‘ ہم ان آپشنز کو ترکی یا انڈین ماڈل بھی کہہ سکتے ہیں۔ہم پہلے ترکی ماڈل کی طرف آتے ہیں‘ رجب طیب اردگان 1954ء میں استنبول میں قاسم پاشا کے علاقے میں پیدا ہوئے‘ غریب گھرانے سے تعلق رکھتے تھے‘ سکول سے واپسی پر گلیوں میں شربت بیچتے تھے‘بڑی مشکل ....مزید پڑھئے‎