رحم کیجئے، کرم کیجئے،شریف خاندان عمران خان کی منت ترلے کرنے لگ گیا ؟ کون لوگ وزیراعظم سے رابطہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ؟ معافی کی اپیل پر فیصلے سے پہلے وزیراعظم کا جواب بھی سنا دیا گیا، حامد میر کے تہلکہ خیز انکشافات

  جمعہ‬‮ 26 اپریل‬‮ 2019  |  14:20

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)سینئر صحافی و اینکر پر سن حامد میر نے نجی ٹی وی کے ایک پروگرام میں اانکشاف کیا ہے کہ پیپلز پارٹی اور ن لیگ کے قریبی ساتھی و رہنما وزیراعظم عمران خان سے رابطہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ۔حامدمیر نے بتایا کہ سپریم کورٹ جو فیصلہ دیا تھا جس کی وجہ سے نواز شریف کو چھ ہفتوں کیلئے ضمانت پر رہا کیا تھا اگر اس فیصلے کو دوبارہ پڑھا جائے تو اس کے مطابق اب مزید ضمانت کی کوئی گنجائش نہیں نظر آرہی ۔ خواجہ حارث نے جو درخواست دائر کی تھی وہ مختلف ڈاکٹرز کی


تجویز کی بنیاد پر دائر کی گئی ہے ۔ معروف صحافی و کالم نگار حامد میر نے مزید کہا ہے کہ مجھے آئین و قانون میں کوئی گنجائش نظر نہیں آتی کہ نواز شریف کو چھ ہفتوں کی ضمانت دی گئی تھی تب بھی یہ ضمانت ملنا انتہائی مشکل نطر آتا تھا ۔ اگر عدالت آئین و قانون میں کوئی گنجائش نکال کر میاں نوا زشریف کو ضمانت دیتی ہے تو پھر یہ سہولت عام شہریوں کو بھی ملنی چاہیے کیونکہ قانون اور آئین سب کیلئے یکساں ہونا چاہیے ۔ ان کا مزید کہنا تھا کہ جو لوگ عمران خان سے رابطہ کرنے کی کوشش کر رہے ہیں ان کا تعلق شریف خاندان کے قریبی ساتھیوں میں ہوتا ہے ، یہ لوگ وزیراعظم تک پہنچتے ہیں اور کہتے ہیں کہ ہم پر رحم کیجئے ، کرم کیجئے ۔ عمران خان پر جتنی مرضی تنقید کر لی جائےوہ اپنا فیصلہ نہیں بدلیں گے ۔ جب تک اپوزیشن صحیح راہ پر چلنا شروع نہیں کرتی اس وقت تک وزیراعظم عمران خان ایسے ہی رہیں گے ۔

موضوعات:

loading...