عمران خان نے جو پلندہ سپریم کورٹ میں جمع کرایا وہ مکمل جعلی ہے ، غیر قانونی فنڈنگ کیلئے کون سا طریقہ استعمال کیاگیا؟ پی ٹی آئی کے بانی رکن اکبر ایس بابر کے مزید تہلکہ خیز انکشافات

  جمعرات‬‮ 21 جنوری‬‮ 2021  |  12:44

اسلام آباد(مانیٹرنگ ڈیسک)پاکستان تحریک انصاف کے بانی رکن اکبر ایس بابر نے کہا ہے کہ ہم نے دو کمپنیوں سے جو ثبوت دیئے ہیں وہ تقریبا ًتین ملین ڈالر کے ہیں ۔ہم نے یہ کبھی بھی کلیم نہیں کیا کہ یہ پیسے ہنڈی کے ذریعے آئے ہیں۔ ہنڈی کے ذریعے جو پیسہ ہے وہ مشرق وسطیٰسے آیا ہے ۔ پی ٹی آئی کے ملازمین کے بینک اکاونٹس میں آیا ہے ۔ ان بینک اکائونٹس کی باقاعدہ تحقیقات خود پی ٹی آئی نے ایک آڈیٹر کے ذریعے کی ہے اور اس میں وہ ثابت ہوچکا ہے۔ پی ٹی آئی کے اکاونٹس


میں غیر قانونی ذرائع سے پیسہ آیا۔غیر قانونی فنڈنگ جو ہوئی ہے وہ ہنڈی کے ذریعے ہوئی ہے۔پی ٹی آئی نے جو پلندہ دیا ہے جو سپریم کورٹ میں عمران خا ن نے جمع کرایا ہے وہ مکمل جعلی ہے۔ سپریم کورٹ مجھے بلائے میں ثابت کروں گا۔ بینک اکائونٹس کو چھپایا گیا ،کمپنیاں غیر قانونی طور پر رجسٹرڈ کی ہوئی ہیں۔ روزنامہ جنگ کی رپورٹ کے مطابق اکبر ایس بابر نے اپنے ایک انٹرویو میں مزید کہا کہ قانون کے مطابق پاکستانی شہری ہی فنڈز دے سکتا ہے اور اس کا ریکارڈ ہونا چاہئے ۔عدم اعتماد الیکشن کمیشن پرنہیں کیا کمیٹی پر کیاہے۔کمیٹی نے اپنا کام درست طریقے سے نہیں کیا۔اسکروٹنی کمیٹی پر الیکشن کمیشن آف پاکستان نے بھی عدم اعتماد کیا۔الیکشن کمیشن کا27 اگست2020 کاآرڈر پڑھئے الیکشن کمیشن نے ہماری بار باردرخواست کے بعدایک تاریخ مقرر کی۔ 17 اگست2020 تک کمیٹی اپنا کام مکمل کرے اور اپنی رپورٹ جمع کرائے کمیشن کے سامنے تاکہ وہ پھر اس کی کارروائی کرے کیس کا فیصلہ کرے ۔ پھر جب انہوں نے وہ رپورٹ جمع کرائی ہم تو پہلے دن سے کہہ رہے تھے کہ کمیٹی تو اپنا کام نہیں کررہی ۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

استنبول یا دہلی ماڈل

میاں نواز شریف کے پاس دو آپشن ہیں‘ استنبول یا دہلی‘ ہم ان آپشنز کو ترکی یا انڈین ماڈل بھی کہہ سکتے ہیں۔ہم پہلے ترکی ماڈل کی طرف آتے ہیں‘ رجب طیب اردگان 1954ء میں استنبول میں قاسم پاشا کے علاقے میں پیدا ہوئے‘ غریب گھرانے سے تعلق رکھتے تھے‘ سکول سے واپسی پر گلیوں میں شربت بیچتے تھے‘بڑی مشکل ....مزید پڑھئے‎

میاں نواز شریف کے پاس دو آپشن ہیں‘ استنبول یا دہلی‘ ہم ان آپشنز کو ترکی یا انڈین ماڈل بھی کہہ سکتے ہیں۔ہم پہلے ترکی ماڈل کی طرف آتے ہیں‘ رجب طیب اردگان 1954ء میں استنبول میں قاسم پاشا کے علاقے میں پیدا ہوئے‘ غریب گھرانے سے تعلق رکھتے تھے‘ سکول سے واپسی پر گلیوں میں شربت بیچتے تھے‘بڑی مشکل ....مزید پڑھئے‎