تمام سرکاری اور پرائیویٹ یونیورسٹیاں، کالجز بند ،اعلیٰ تعلیمی ادارے کب دوبارہ کھلیں گے؟ نوٹیفکیشن جاری

  بدھ‬‮ 25 ‬‮نومبر‬‮ 2020  |  15:54

لاہور( این این آئی)محکمہ ہائیر ایجوکیشن نے لاہور سمیت صوبے کی یونیورسٹیوں اور کالجوں کو بند کرنے کا نوٹیفکیشن جاری کر دیا، پرائیویٹ یونیورسٹیوں اور کالجوں کو بھی مکمل طور پر بند رکھا جائے گا ۔تفصیلات کے مطابق محکمہ ہائیر ایجوکیشن کی ایڈیشنل چیف سیکرٹریارم بخاری کی ہدایت پر صوبے کے اعلی تعلیمی اداروں کو بند کرنے کے احکامات جاری کر دئیے گئے ہیں، سرکاری اور پرائیویٹ یونیورسٹیوں کی کل  جمعرات سے بندش ہوگی اور نوٹیفکیشن کا اطلاق پرائیویٹ کالجوں پر بھی ہوگا۔محکمہ ہائیر ایجوکیشن نے یونیورسٹیوں اور کالجوں کی 24 دسمبر تک بندش کا نوٹیفکیشن جاری کیا ہے، پرائیویٹ


یونیورسٹیوں کو بھی مکمل طور پر بند رکھا جائے گا، کالجوں میں آن لائن ٹیچنگ کیلئے الگ سے شیڈول جاری کیا جائے گا، کل  سے کالجوں میں آن لائن ٹیچنگ کا آغاز ہوگا۔ایڈیشنل چیف سیکرٹری محکمہ ہائر ایجوکیشن ارم بخاری کے مطابق یونیورسٹیوں اور کالجوں میں موسم سرما کی تعطیلات کا نوٹیفکیشن بعد میں جاری کیا جائے گا۔ دوسری جانب صوبائی وزیر سکولز ایجوکیشن ڈاکٹر مراد راس نے کہا ہے کہ تمام سرکاری ،نجی سکولز ،اکیڈمیز ، ٹیوشن سنٹر اور مدارس کل سے بند ہوں گے ، بندش کے دوران تعلیمی ادارے کھولنے کے حوالے سے کسی ادارے کو کسی بھی قسم کیچھوٹ نہیں دی جائے گی۔ٹوئٹر پر اپنے بیان میںانہوںنے کہاکہ حکومتی احکامات کیخلاف ورزی پر سخت کارروائی کی جائے گی۔تعلیمی ادارے کھولنے کے حوالے سے کسی قسم کی چھوٹ نہیں دی جائے گی۔چھٹیوں کے نوٹیفکیشن کا اطلاق آج جمعرات سے ہوگا،تعلیمی ادارے26نومبر سے 10 جنوری بند رہیںگے ۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

براڈ شیٹ

شریف الدین پیرزادہ عرف عام میں جدہ کے جادوگر کہلاتے تھے‘ یہ ملک کے واحد قانون دان تھے جو قانون سے ہر قسم کی گنجائش نکال لیتے تھے چناں چہ ایوب خان سے لے کر جنرل پرویز مشرف تک یہ ملک کے ہر آمر کے دست راست رہے‘ جنرل ضیاء الحق مرشد جب کہ جنرل پرویز مشرف انہیں ....مزید پڑھئے‎

شریف الدین پیرزادہ عرف عام میں جدہ کے جادوگر کہلاتے تھے‘ یہ ملک کے واحد قانون دان تھے جو قانون سے ہر قسم کی گنجائش نکال لیتے تھے چناں چہ ایوب خان سے لے کر جنرل پرویز مشرف تک یہ ملک کے ہر آمر کے دست راست رہے‘ جنرل ضیاء الحق مرشد جب کہ جنرل پرویز مشرف انہیں ....مزید پڑھئے‎