سول سرونٹس رولز 2020 پر فوری عملدرآ مد ، کتنے سال بعد ہر سرکاری ملازم کا ریکارڈ پرکھا جائیگا؟بڑا فیصلہ سامنے آگیا

  جمعرات‬‮ 16 جولائی‬‮ 2020  |  10:39

اسلام آ باد (مانیٹرنگ ڈیسک) وفاقی حکومت کا20سال سروس کی تکمیل پر ریٹائرمنٹ کیلئے سول سرونٹس رولز 2020 پر فوری عمل درآ مد کا فیصلہ۔20 سال سروس کے بعد ہر ملازم کا ریکارڈ پرکھا جائے گا، ریٹائرمنٹ بورڈز اور کمیٹیوں کے فیصلے کے مطابق عمل کیا جائیگا۔ر یٹائر منٹ کے کیسز کاجائزہ لینے کیلئے بورڈ کا پہلا اجلاس رواں ماہ کے آ خری ہفتے میں ہوگا جس میں گریڈ 20سے 22تک کے 565افسروں کے کیسز زیر غور آئیں گے۔ روزنامہ جنگ میں شائع خبر کے مطابق وزیراعظم کی منظوری کے بعد سول سرونٹس (سروس سے ڈائرکٹری ریٹائرمنٹ) رولز2020 وضع کیے


گئےاور انکا نوٹیفکیشن 15اپریل 2020 کو کیا گیا۔ریٹائرمنٹ رولز 2020 کے تحت سروس کے 20 سال مکمل ہونے پر 1-22 گریڈ کےہر افسر / عہدیدار کی لازمی جانچ کی جا ئے گی ۔ ان قواعد کے تحت تشکیل دی جانے والے ریٹائرمنٹ بورڈز اور ریٹائرمنٹ کمیٹیوں کے ذریعے افسران کی کارکردگی کا جائزہ لیا جائے گا۔گریڈ 20-22 کے افسران کی کارکردگی کے جائزے کے لئے بورڈ کی سربراہی چیئرمین ایف پی ایس سی کرتے ہیں جبکہ سکریٹری اسٹیبلشمنٹ ، سیکرٹری کابینہ ، سیکرٹری خزانہ اور سکریٹری قانون اس کے مستقل ممبر ہیں۔ ہر وزارت کے گریڈ 17۔19 کے افسران کی جانچ کیلئے کمیٹی کا سربراہ متعلقہ ایڈیشنل سیکرٹری ہے جبکہ اسٹیبلشمنٹ ڈویژن ، فنانس ڈویژن اور لاء ڈویژن کے جوائنٹ سکریٹری اور متعلقہ محکمہ کے سربراہ اس کمیٹی کے ممبر ہیں۔


موضوعات: