’’وفاقی وزیر قانون زاہد حامد کا استعفیٰ ‘‘ وہ خبر آہی گئی جس کا دھرنے والوں کو انتظار تھا

  پیر‬‮ 20 ‬‮نومبر‬‮ 2017  |  16:41

اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک)دھرنا ختم کرانے کیلئے وفاقی وزیر قانون زاہد حامد نے مستعفی ہونے کی پیش کش کر دی۔ ذرائع کے مطابق وفاقی وزیر قانون زاہد حامد نے حالات نارمل کرنے اور دھرنا ختم کرانے کیلئے لیگی کو قیادت کو استعفیٰ دینے کیلئے رضامندی کا اظہار کر دیا ہے جبکہ دوسری جانب حکومتی مذاکرات ٹیم نے وزیر قانونی کے استعفے کے امکان کو مسترد کر دیا ہے۔ خیال رہے کہ تحریک لبیک یا رسول اللہ کا جڑواں شہروں پر ختم نبوتؐ میں انتخابی آئینی ترمیم کے ذریعے ردوبدل کے خلاف دھرنا آج 15ویں روز میں داخل ہو چکا ہے جس کے


باعث جڑواں شہروں کے مکینوں کی زندگی مفلوج ہو کر رہ گئی ہے جبکہ ٹریفک کا نظام درہم برہم ہو چکا ہے۔شہری عبدالقیوم کی درخواست پر اسلام آباد ہائیکورٹ نے دھرنا ختم کرانے کے کیس کی سماعت کرتے ہوئے حکومت کو مذاکرات یا آپریشن دونوں طرح سے دھرنا ختم کرانے کا حکم دے رکھا ہے جس پر آج مقررہ وقت پر دھرنا ختم نہ کرانے پر عدالت نے وفاقی وزیر داخلہ کو طلب کیا تھا ۔ عدالت نے درخواست پر سماعت کرتے ہوئے حکومت کو دھرنا ختم کرانے کیلئے جمعرات تک کی مہلت دی ہے۔

موضوعات:

loading...