ایوانکاٹرمپ پر انوکھے انداز سے قومی خزانے کو لوٹنے کا الزام ، صرف  باتھ روم کیلئے کتنے کروڑوں روپے خرچ کر دیے ؟ حیران کن انکشاف 

  ہفتہ‬‮ 16 جنوری‬‮ 2021  |  0:08

واشنگٹن(این این آئی)امریکی صدر ٹرمپ کی بیٹی ایوانکا اور داماد کشنر پر انوکھے انداز سے قومی خزانے کو نقصان پہنچانے کے الزامات سامنے آئے ہیں، دونوں کی سیکیورٹی پر تعینات خفیہ ایجنٹس کے باتھ روم استعمال کیلئے کے لیے 1 لاکھ 44 ہزار ڈالر ( 23 کروڑ پاکستانی روپے) سے زائد رقم کرائے کے اسٹوڈیو اپارٹمنٹ کیمد میں بہا دی گئی۔امریکی اخبار کی رپورٹ کے مطابق ایوانکا اور کشنر نے خفیہ ایجنٹس پر اپنے پر تعیش گھر کے باتھ روم استعمال کرنے پر پابندی لگا رکھی تھی، خفیہ ایجنٹس سڑکیں ، فٹ پاتھ، پبلک ٹوائلٹس اور قریبی مقامات استعمال کرتے


رہے ۔ہمسایوں کی شکایت پر گھر کے قریب 3 ہزار ڈالر ماہانہ کرائے پراسٹوڈیو اپارٹمنٹ لیا گیا ، یوں اب تک 1 لاکھ 44 ہزار ڈالر یعنی 23 کروڑ پاکستانی روپے سے زائد رقم کرائے کی مد میں بہا دی گئی ہے، جبکہ وائٹ ہاوس نے خبر کی تردید کی ہے۔امریکی اخبار کی رپورٹ میں بتایا گیا دونوں نے اپنی سیکیورٹی پر تعینات خفیہ ایجنٹس کو اپنے گھر میں بنیادی انسانی ضرورت واش روم استعمال نہیں کرنے دیا،جیئرڈ کشنر نے واشنگٹن ڈ ی سی میں 2017میں 5 ہزار مربع فٹ کا پرتعیش مکان کرائے پر لیاجس میں چھ بڑے اور ایک چھوٹا ٹوائلٹ تھا لیکن ایوانکا اور کشنر نے خفیہ ایجنٹس کو ٹوائلٹس استعمال کرنے کی اجازت نہیں دی۔ایجنٹس مجبورا فٹ پاتھ، ہوٹلوں کے ٹوائلٹس،پبلک ٹائلٹس اور قریبی مقامات استعمال کرتے رہے ، ہمسایوں نے شکایت کی تو ایجنٹس سابق صدر اوباما کے گیراج کا ٹوائلٹ استعمال کر تے رہے تاہم بعد میں ایوانکا اور کشنر کے مکان کے قریب سڑک پار ایک اسٹوڈیو اپارٹمنٹ تین ہزار ڈالر ماہانہ کرائے پر مل گیا ۔اس طرح 2017 سے اب تک ایک لاکھ چوالیسہزار یعنی 23 کروڑ پاکستانی روپے سیزائد صرف خفیہ ایجنٹس کے ٹوائلٹس پر خرچ کر دیئے گئے ، یہ پیسے امریکی ٹیکس دہندگان کی جیب سے ادا کئے گئے ۔دوسری جانب ترجمان وائٹ ہاوس نے خبر کی تردید کی ہے اور کہا خفیہ ایجنٹس کو باتھ روم استعمال کرنے سے نہیں روکا گیا تھا۔


موضوعات:

زیرو پوائنٹ

آخری موو

سینیٹ کا الیکشن کل اور پلاسی کی جنگ 23 جون 1757ءکو ہوئی اور دونوںنے تاریخ پر اپناگہرا نقش چھوڑا‘ بنگال ہندوستان کی سب سے بڑی اور امیر ریاست تھی‘پورا جنوبی ہندوستان نواب آف بنگال کی کمان میں تھا‘ سراج الدولہ بنگال کا حکمران تھا‘ دوسری طرف لارڈ رابرٹ کلائیو کمپنی سرکار کی فوج کا کمانڈر تھا‘ انگریز کے ....مزید پڑھئے‎

سینیٹ کا الیکشن کل اور پلاسی کی جنگ 23 جون 1757ءکو ہوئی اور دونوںنے تاریخ پر اپناگہرا نقش چھوڑا‘ بنگال ہندوستان کی سب سے بڑی اور امیر ریاست تھی‘پورا جنوبی ہندوستان نواب آف بنگال کی کمان میں تھا‘ سراج الدولہ بنگال کا حکمران تھا‘ دوسری طرف لارڈ رابرٹ کلائیو کمپنی سرکار کی فوج کا کمانڈر تھا‘ انگریز کے ....مزید پڑھئے‎